بھارتی سنسر بورڈ کی اجازت کے باوجود ’پدماوتی‘ کی نمائش روکنے کیلئے دھمکیاں

بھارتی سنسر بورڈ کی اجازت کے باوجود انتہا پسند کرنی سینا نے فلم ’پدماوتی‘ کی نمائش روکنے کی دھمکی دے دی۔گزشتہ دنوں بھارتی سنسر بورڈ نے دپیکا پڈوکون کی فلم ’پدماوتی‘ کو نام کے ساتھ ساتھ 5 بڑی تبدیلیوں کے بعد نمائش کی اجازت دینے پر آمادگی ظاہر کی تھی۔فلم سنسر بورڈ کے اسپیشل پینل میں تاریخ دان اور رانی پدمنی کے خاندان کا ایک فرد شریک تھا جس نے فلم کا نام ’پدماوتی‘ سے ’پدماوت‘ رکھنے اور گیت ’گھومر‘ میں تبدیلی کا کہا ہے۔فلم کو کئی تبدیلیوں سے مشروط اجازت ملنے پر انتہا پسند ایک بار پھر دھکمیوں پر اتر آئے ہیں اور فلم کی نمائش کی اجازت کا فیصلہ کسی صورت نہ ماننے کا اعلان کیا ہے۔کرنی سینا کے صدر سکھ دیو سنگھ نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ فلم کی نمائش سے بھارت میں انتشار پیدا ہوگا اس لیے کسی صوررت فلم کی نمائش نہیں ہونے دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ اگر فلم کی نمائش کی گئی تو کسی بھی جانی و مالی نقصان کی ذمہ دار حکومت ہی ہوگی۔یاد رہے کہ دپیکا پڈوکون کی فلم ’پدماوتی‘ یکم دسمبر کو ریلیز ہونا تھی لیکن انتہا پسندوں کی دھمکیوں کے باعث فلم کی نمائش موخر کردی تھی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.