Daily Taqat

نعلین پاکؐ چوری کیس، 16 سال پُرانا کیس ری اوپن

لاہور : چیف جسٹس آف پاکستان  ثاقب نثار نے نعلین مبارک کی چوری سےمتعلق کیس محکمہ اوقاف پر اظہار برہمی کرتے ہوئے معاملے پر جےآئی ٹی کےتمام نمائندوں کوطلب کرلیا۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں نعلین مبارک کی چوری سےمتعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں ہوئی، سماعت میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ نعلین مبارک کی چوری عقیدےکاکیس ہے۔انہوں نے اپنے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اتنی قیمتی چیزچوری ہوگئی اورہمیں پتہ ہی نہیں، اس موقع پر وکیل محکمہ اوقاف کا کہنا تھا کہ ایف آئی آردرج کروائی جاچکی ہے۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ یہ عام کیس نہیں ہےکہ مقدمہ درج کروایااوربیٹھ گئے،اس چوری کوہوئے16سال گزرچکےہیں۔چیف جسٹس نے معاملے پر سپریم کورٹ کی جانب سے بنائی گئی جےآئی ٹی کےتمام نمائندوں کوطلب کرتے ہوئے سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کردی۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 14 اکتوبر کی سماعت میں سپریم کورٹ نے بادشاہی مسجد سے نعلین پاک کی چوری کے معاملے پرانکوائری کے لیے جے آئی ٹی بنانے کا حکم دے دیا تھا۔چیف جسٹس نے کہا کہ جے آئی ٹی میں آئی ایس آئی، آئی بی، ڈی آئی جی پولیس شامل ہوں گے اورجے آئی ٹی اپنی تحقیقات کرکے جامع رپورٹ پیش کرے گی۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »