ورلڈ الیون کا کپتان بنانے کےلئے کسی نے رابطہ نہیں کیا،سہیل عباس

کراچی:پاکستان ہاکی فیڈریشن نے ہاکی “ہال آف فیم “کے تحت 10 سابق کھلاڑیوں کو، جن میں 6پاکستانی کھلاڑی شامل ہیں، فی کس5 لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا ہے۔حیران کن طور پر پی ایچ ایف کی “ہال اف فیم” فہرست میں قومی ہاکی ٹیم کے سابق کپتان اور پنالٹی کارنر ایکسپرٹ سہیل عباس کو نظر انداز کر دیا گیا ہے۔42سالہ سہیل عباس جنہوں نے ماضی میں قومی ہاکی ٹیم کی قیادت کے فرائض انجام دیے اور بین الااقومی ہاکی کے 350میچوں میں ریکارڈ 348 گول کئے،ان کا نام شامل کر نے کی زحمت گوارا نہیں کی گئی۔2010 گوانگ ژو ایشین گیمز میں قومی ہاکی ٹیم کے گولڈ میڈلسٹ ٹیم کے رکن سہیل عباس سے اس بارے میں جب رابطہ کیا گیا تو انہوں نے صاف کہہ دیا کہ پی ایچ ایف کے کسی عہدیدار نے ان سے رابطہ نہیں کیا۔سہیل عباس نے کہا کہ انہوں نے لوگوں سے سنا ہے کہ ورلڈ الیون میں انہیں بطور کپتان کھلانے کی تجویز ہے البتہ اس بارے میں جب ان سے کوئی رابطہ کرے گا تب ہی وہ اپنا جواب دیں گے۔اس سوال پر کہ “ہال آف فیم” میں انہیں شامل نہیں کیا گیا توسہیل عباس نے مسکراتے ہو ئے جواب دیا کہ اگرمیرا نام اس فہرست میں شامل نہیں کیا گیا تو میں کیا کرسکتا ہوں ۔پاکستان ہاکی کے مستقبل کے سوال پر اولمپیئن سہیل عباس نے کہا کہ انہیں امید نہیں بلکہ یقین ہے کہ ایک دن ضرور آئے گا جب پاکستان ہاکی ایک بار پھر سب سے آگے ہو گی۔

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.