بھارتی خواتین باکسرزنے انعام میں ملنے والی گائیں واپس کردیں

نئی دہلی: بھارتی ریاست ہریانہ میں تین خواتین باکسرز نے زرعی وزیر سے انعام میں ملنے والی گائیں واپس کردی۔

نومبر2017 میں گوہاٹی میں ہونے والی ’’ورلڈ یوتھ ویمن باکسنگ چیمپئن شپ‘‘ میں میڈلزجیتنے پرچھ خواتین باکسرزکوبطور انعام وزیراوم پرکاش دھنکڑ نے ایک ایک گائے دی تھی۔ مگرگائے ان کھلاڑیوں کے لیے زحمت بن گئی۔ ان کے مزاج ملتے ہیں نہ ہی ٹھیک سے دودھ دیتی ہیں۔

چھ میں سے تین کھلاڑیوں نیتو،جیوتی اورششی نے اپنی اپنی گائے واپس کردی ہے۔ جیوتی کے مطابق گائے نے میرے گھر کے افراد پر تین مرتبہ حملہ کردیا جس سے میری والدہ زخمی ہوگئیں

ساتھی کھلاڑیوں کو دیکھ کر انوپما نامی خاتون باکسر بھی بی جے پی حکومت کا یہ تحفہ لوٹانے پر غور کررہی ہے۔ انوپما کے مطابق گائے ٹھیک سے دودھ نہیں دیتی، 10ہزار روپے کا چارہ کھانے کے باوجود گائے صرف 3 لیٹر روزانہ دودھ دیتی ہے۔اس مشکل سے چھٹکارے کا آسان حل گائے واپس کرناہی ہے۔

گائے کا تحفہ دینے والے وزیرنے یہ کہہ کریہ تحفہ دیا تھا کہ گائے کے دودھ سے خوبصورتی میں اضافہ ہونے کے ساتھ ساتھ دماغی صلاحیتوں میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔

دوسری جانب جس ڈیری فارم کے مالک سے یہ گائیں خریدی گئی تھیں اس کا موقف ہے کہ ہریانہ حکومت کی جانب سے خریدی جانے والی ہرایک گائے کی قیمت چالیس سے پچاس ہزار روپے کے درمیان ہے جو اچھی نسل کی ہیں اور ٹھیک سے دودھ دیتی تھیں۔

کھلاڑیوں کی جانب سے گائے واپس کرنے پر اوم پرکاش دھنکھڑ نے آفر کی ہے کہ یہ گائے پسند نہیں تو پوری ریاست میں سے کہیں بھی اپنی پسند کی گائے خرید لیں اوربل ہمیں بھجوا دیں۔ ریاست ادائیگی کردے گی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.