پاکستان میں کرکٹ کا زبردست جنون ہے، کرس جارڈن

گزشتہ برس پاکستان سپر لیگ کے فائنل کے لیے لاہور کا دورہ کرنے والی پشاور زلمی کی ٹیم کے اہم رکن کرس جارڈن کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کرکٹ کا زبردست جنون پایا جاتا ہے۔

پشاور زلمی کو پی ایس ایل کے پلے آف مرحلے میں جانے کے لیے مزید ایک میچ جیتنا ہے، اگر پشاور زلمی کی ٹیم کل بروز جمعہ لاہور قلندرز کے خلاف اپنا میچ جیتنے میں کامیاب ہو جاتی ہے تو پی ایس ایل کی دفاعی چیمپئن ٹورنامنٹ کی ٹاپ فور ٹیموں میں جگہ بنانے میں کامیاب ہو جائے گی۔

آج پشاور زلمی نے اپنے اہم ترین میچ میں کراچی کنگز کو 44 رنز سے شکست دیکر ٹورنامنٹ میں اپنی بقا کی جنگ کو برقرار رکھا ہے۔

پشاور زلمی کے فاسٹ بولر کرس جارڈن نے جیو نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے بتایا کہ اگلے مرحلے میں جانے کے لیے ہم ایک جیت کی دوری پر ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم دفاعی چیمپئن اور نمبر ون ہیں اور ہر ٹیم کی کوشش ہے کہ ہمیں ہرائے، آج ہم نے بہت اچھا میچ جیتا ہے اور امید ہے کہ آج کے میچ سے ہمیں اعتماد ملے گا، یقین ہے کہ ہم اپنا آخری لیگ میچ بھی جیت لیں گے۔

پی ایس ایل کا دیگر لیگز کے ساتھ موازنے کے حوالے سے کرس جارڈن کا کہنا تھا کہ یہ لیگ بھی دوسری بین الاقوامی لیگز کی طرح اچھی ہے جس میں اعلیٰ پائے کے بین الاقوامی اور مقامی کھلاڑی شامل ہیں۔

کرس جارڈن کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل ایک بہترین معیار کی لیگ ہے جس میں سخت مقابلے ہور ہے ہیں، صرف 6 ٹیمیں ہیں جس میں سے اوپر کی 4 ٹیموں کو آگے جانا ہے۔

پشاور زلمی کے فاسٹ بولر کا کہنا تھا کہ ٹی ٹوئنٹی میں کوئی بھی دن کسی بھی کھلاڑی کا ہو سکتا ہے اور کوئی بھی ٹیم دوسری ٹیم سے مضبوط نہیں ہوتی، یہی چیز میچ کو دلچسپ بناتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امید ہے کہ پی ایس ایل میں مزید بہتری آئے گی اور ہمیں مزید اچھی کرکٹ دیکھنے کو ملے گی۔

پاکستان جانے سے متعلق سوال پر کرس جارڈن کا کہنا تھا کہ پاکستان ضرور جاؤں گا، گزشتہ برس بھی لاہور کا دورہ بہت شاندار رہا تھا، اور تماشائیوں نے میچ کی پہلی سے آخری بال تک بھرپور ساتھ دیا تھا۔

کرس جارڈن نے کہا کہ اگر ہماری ٹیم اگلے مرحلے میں گئی تو پاکستان ضرور جاؤں گا اور پاکستان میں کرکٹ کے لیے جو جوش ہے وہ بہت ہی زبردست ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پہلی مرتبہ تو مجھے اندازہ ہی نہیں تھا کہ پاکستان میں ہر کوئی کرکٹ کے لیے اتنا زبردست جذبہ رکھتا ہو گا، ’’ویلڈن پاکستانی فینز، ویلڈن لاہور فینز اور ویلڈن کراچی فینز‘‘۔

غیر ملکی کرکٹرز کو پاکستان جانے پر مائل کرنے کے سوال پر کرس جارڈن کا کہنا تھا کہ پاکستان جانے کا فیصلہ ہر کرکٹر کا اپنا ذاتی فیصلہ ہے کیونکہ آپ نہیں جانتے کہ کس کے گھر کے حالات کس طرح کے ہیں۔

کرس جارڈن کا کہنا تھا کہ جہاں تک میرا تعلق ہے تو میرا آخری دورہ پاکستان بہت شاندار رہا تھا، لاہور کے کلچر کو میں کبھی نہیں بھلا سکتا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.