زینب قتل کیس ، سینٹ میں قاتل کو سرعام پھانسی دینے کی تجویز پیش:رحمان ملک

قصور کی ننھی کلی زینب کے قاتل کی گرفتاری کے بعد سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے عمران علی کو سرعام پھانسی دینے کی تجویز پیش کردی ہے، تجویز کمیٹی کے سربراہ سینٹر رحمان ملک کی جانب سے پیش کی گئی۔قصور کی ننھی  زینب کے قاتل کو نشان عبرت بنانے کے لئے سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے مجرم کو سرعام پھانسی کی سزا کی تجویز پیش کردی ہے۔ تجویز پیش کرتے ہوئے قائمہ کمیٹی کے سربراہ اور پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما سینیٹر رحمان ملک کا کہنا تھا کہ بچوں سے زیادتی میں ملوث درندوں کوسرعام پھانسی دی جائے،سینیٹ کی قائمہ کمیٹی نے تجویزکیاتھاکہ قاتل کوسرعام پھانسی دی جائے اور حکومت کوچاہیے کہ وہ اس سلسلے میں ترمیمی بل لائے۔تجویز کمیٹی میں پیش ہونے کے بعد حاصل بزنجو نے سرعام پھانسی کی سزادینے کے لیے قانون میں تبدیلی کی مخالفت کی جبکہ پیپلزپارٹی کے فرحت اللہ بابر نے بھی سر عام پھانسی کی سزا کی مخالفت کردی۔سینٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے سینٹر فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ ضیا ءدور میں بھی زیادتی کے ایک مجرم کو سرعام پھانسی کی سزا دی گئی تھی مگر اس سے کوئی فرق نہیں پڑا،تاریخ بتاتی ہے کہ مجرم سزاؤں سے خو فزدہ نہیں ہوتے ۔ مجرم کو سر عام پھانسی کی سزا کی مخالفت کرتے ہوئے سینیٹر میر حاصل بزنجوکا کہنا تھا کہ کسی بھی مجرم کو سر عام سزائے موت دینے کی سزا کی معاشرے میں گنجائش نہیں ،مجرم کو قانون کے مطابق سزا دی جائے کیوں کہ ایسی ترمیم کے معاشرے میں انتہائی منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.