زینب قتل کیس، وزیراعلیٰ کو یقین دلاتا ہوں کیس کی روزانہ سماعت ہو گی: جسٹس منصور علی شاہ

قصور: ننھی زینب کے علاوہ اور کئی معصوم بچوں کی زندگی برباد کرنے والا سفاک درندہ محافل میں نعتیں پڑتا اور نقابت کرتا تھا۔ ملزم راجگیری کا کام کرتا تھا اور فارغ وقت میں محافل وغیرہ میں جاکر نعتیں پڑتا تھا۔ مقامی اخبار کے مطابق ملزم کے چار بھائی اور تین بہنیں ہیں۔ ملزم کا والد گزشتہ دنوں وفات پاچکا ہے۔ ملزم کے بارے میں اس قسم کے کاموں کا کسی کو اندازہ نہ تھا۔ ملزم نے فیس بک پر عمران علی نقشبندی کے نام سے آئی ڈی بھی بنارکھی ہے، ملزم کے بیان کے بعد پولیس نے اس کے تمام گھر والوں کو بھی حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.