ٹیبل پر لٹاکر پاؤں سے گردن تک رسی باندھ کرتشدد کیا جاتاتھا،مقتول نقیب اللہ کے ساتھ اٹھائے گئے لڑکوں کا بیان

کراچی:مقتول نقیب اللہ محسود کے ساتھ اٹھائے گئے لڑکوں نے کہا ہے کہ ٹیبل پر لٹاکر پاؤں سے گردن تک رسی سے باندھ کر تشدد کیا جاتا۔
سابق ایس ایس پی راو انوار کے ہاتھوں اغوا اور تشدد کانشانہ بننے والے ’’حضرت علی‘‘ نامی لڑکے کا کہنا تھا کہ آنکھوں پر پٹی باندھی گئی اور منہ میں کپڑا ڈالا جبکہ آنکھ اور ناک میں نسوار ڈالر کر کا ن سے پانی ڈالتے رہے جو سیدھا میدے میں جاتا تھا ۔ یہی نہیں ٹیبل پر لٹا کر پاوں ہاتھ اور گردن سے باندھ کر ہم پر  تشدد کیا جاتا تھا۔ راو انوار کو نقیب اللہ کو جعلی پولیس مقابلے میں ہلاک کرنے والے راو انوار کو ان کے عہدے سے فارغ کردیا گیا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.