Daily Taqat

سیکورٹی فیچرز کا حامل وہیکل رجسٹریشن سسٹم مارچ 2018سے نافذ العمل ہو گا

راولپنڈی سمیت پنجاب بھر میں نیا وہیکل رجسٹریشن سسٹم آئندہ ماہ سے رائج ہو گا ۔ڈائریکٹر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن راولپنڈی تنویر عباس گوندل نے اے پی پی کو بتایاکہ شہریوں کی سہولت کے لیے جدید سیکورٹی فیچرز کا حامل وہیکل رجسٹریشن سسٹم مارچ 2018سے نافذ العمل ہو گا ۔انہوں نے بتایاکہ نئے وہیکل رجسٹریشن سسٹم منصوبے میں رجسٹریشن بک کی جگہ سمارٹ کارڈ ،جدید سیکورٹی فیچرز کی حامل کیمرا ریڈایبل نمبر پلیٹس اور یونیورسل نمبر کا اجراء شامل ہے ۔ای ٹی او ایڈمن ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن راولپنڈی نعمان خالد نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایاکہ صوبے میں نئی نمبر پلیٹس کے اجراء کی تجویز ایکسائز ڈیپارٹمنٹ اور پنجاب سیف سٹی پراجیکٹ نے دی تھی تاکہ تبدیل شدہ ،نئے فونٹ کی اور یونیورسل نمبر کی حامل نمبر پلیٹس جاری کی جاسکیں اور انہیں کیمرا ریڈ ایبل بنایاجائے ۔انہوںنے بتایاکہ حالیہ نمبر پلیٹس سیف سٹی پراجیکٹ کے سی سی ٹی وی کیمرہ سے ریڈ ایبل نہیں ہیں جس کی وجہ سے سیکورٹی مسائل کے پیش نظر نئے وہیکل رجسٹریشن سسٹم کی ضرورت تھی ۔انہوں نے بتایاکہ پنجاب حکومت صوبہ بھر میں نیا وہیکل رجسٹریشن سسٹم متعارف کرارہی ہے جس کے تحت یکم مارچ سے یونیورسل نمبر پلیٹ کا اجراء شروع ہو جائے گا ۔انہوں نے کہاکہ نئے وہیکل رجسٹریشن نظام کی بدولت نہ صرف یہ کہ گاڑیوں کے کاغذات میں جعلسازی کی حوصلہ شکنی ہو گی اور گاڑیوں کی رجسٹریشن کا نظام مربوط ہو گا بلکہ اس سے صوبہ بھر کے کسی بھی ضلع میں ایک جیسے نمبر کی دوسری گاڑی کی موجودگی کا احتمال بھی ختم ہو گا ۔انہوںنے اے پی پی کو مزید بتایاکہ یونیورسل نمبر سسٹم کے اجراء سے تمام چھوٹے بڑے اضلاع میں گاڑیوں کی نمبر پلیٹ کی بدولت حاصل ہونے والی اہمیت یکساں ہو جائے گی ،لاہور اور راولپنڈی پر رجسٹریشن کے بوجھ میں کمی آئے گی اور دیگر چھوٹے اضلاع کو بھی ریونیو حاصل ہو گا جبکہ اس سے کرپشن کا بھی خاتمہ ہو سکے گااور جرائم کے دوران گاڑیوں کی جعلی نمبر پلیٹس کا ازخود خاتمہ ہو جائے گا ۔انہوں نے اے پی پی کوبتایاکہ نئے وہیکل رجسٹریشن سسٹم کی بدولت گاڑی مالکان صوبے کے کسی بھی ضلع میں ٹوکن ٹیکس کی ادائیگی کروا سکیں گے اور گاڑی کے رجسٹریشن کے ضلع سے رابطہ کی ضرورت نہیں ہو گی ۔ایک سوال کے جواب میں نعمان خالد نے بتایاکہ قبل ازیں ہر ضلع کے کمپیوٹر سرور میں ایک ہی ضلع کی گاڑیوں کے ریکارڈ کی وجہ سے ایسا ممکن نہ تھا ۔گذشتہ برس صوبے بھر کے تمام اضلاع کو باہم مربوط کرتے ہوئے تمام ڈیٹا سنٹرلائزڈ کر دیا گیاہے جس سے تمام ڈیٹا ایک ہی سرور پر دستیاب ہو گا ۔نئے نظام کے تحت رجسٹریشن بک کی جگہ 6سے زائد سیکورٹی فیچرز کا حامل سمارٹ کارڈ جاری کیا جائے گا جس میں موجود الیکٹرونک چپ پر گاڑی کی خرید ،فروخت اور مالک کے بارے میں تمام تر معلومات دستیاب ہوں گی۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »