ریلوے کی جانب سے گزشتہ چار سال کی رپورٹ اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کے سامنے پیش

وزارت ریلوے کی جانب سے بتایا گیا کہ گزشتہ چار سال میں ریلوے کی زمینوں پر قبضہ واگزار کرانے میں بڑی پیشرفت ہوئی اور اب تک گیارہ سو چوراسی ایکڑ زمین واگزار کرائی جاچکی ہے۔ قبضوں کے بڑے بڑے مقدمات نیب کو بھی بھیجے جارہے ہیں۔ ریلوے کی زمینوں پر جن کچی آبادیوں نے قبضہ کررکھا ہے ان کی نشاندہی بھی کرلی گئی ہے۔ حکومتی رکن شیخ روحیل اصغر نے کہا کہ جونیجو دور میں کچی آبادیوں کو مالکانہ حقوق دینے کا حکم دیا گیا تھا۔ پارلیمانی سیکرٹری راجہ جاوید اخلاص نے بتایا کہ انیس سو پچیاسی سے پہلے کی آباد آبادیوں کو ریگولرائز کئے جارہے ہیں۔ اب تک ہزاروں ایکڑ زمین کچی آبادی کو علاقے الاٹ کئے جا چکے ہیں، پچھلے پانچ سالوں میں بھی کچی آبادیوں کو این او سیز دی گئیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.