حکومت نے پنجاب یونیورسٹی تصادم میں ملوث طلبہ کو معاف کرنے کا اعلان

لاہور: حکومت نے پنجاب یونیورسٹی تصادم میں ملوث طلبہ کو معاف کرنے کا اعلان کردیا, پنجاب گورنمنٹ کی جانب سے طلبہ کی ضمانتیں کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ پنجاب یونیورسٹی اپنے ڈسپلن کے مطابق کارروائی کرے گی۔

پنجاب کے وزیر ہائر ایجوکیشن سید رضا علی گیلانی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جو ہاٹ لائنر طلبہ ہیں ان کو یونیورسٹی سے نکالا جائے گا مگر پنجاب گورنمنٹ کی جانب سے تصادم میں ملوث طلبہ کی ضمانتیں کروائی جائیں گی کیونکہ طالب علم ہونے کے ناطے ان کا حق ہے کہ انہیں ریلیف دیا جائے کیونکہ وہ کوئی دہشت گرد تو نہیں ہیں۔ پنجاب یونیورسٹی کی ڈسپلنری کمیٹی ہاٹ لائنرز کو قانون کے مطابق یونیورسٹی سے بے دخل کرے گی ہم نے 37طلبہ کو جیل میں پرسنل ہیئرنگ کے نوٹسز جاری کررکھے ہیں۔بلوچی طلبہ کو میرٹ سے ہٹ کر داخلہ دیا گیا جبکہ اتنا کوٹہ نہیں تھا اب آئندہ بلوچستان حکومت کی مرضی کے بغیر طلبہ کو داخلہ نہیں ملے گا۔

دوسری طرف سرفراز بگٹی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان کی جانب سے خصوصی ہدایت پر لاہور آیا ہوں اور رات جیل میں بلوچی طلبہ سے ملاقات بھی کی۔ پنجاب گورنمنٹ کا مشکور ہوں کہ انہوں نے تمام طلبہ کی ضمانتیں کروانے کا اعلان کیا ہے۔پنجاب یونیورسٹی میں طلبہ تصادم پر افسوس ہوا ہے پنجاب یونیورسٹی کو سیاست سے پاک کیا جائے۔

بلوچستان کے وزیر داخلہ سرفراز بگٹی اور وزیر ہائر ایجوکیشن رضا علی گیلانی نے مشترکہ پریس کانفرنس کرنے کے اعلان کے باوجود ایک ہی جگہ ایگزیکٹو کلب پنجاب یونیورسٹی میں موجودگی کے باوجود علیحدہ علیحدہ پریس کانفرنس کی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.