ملزم عمران کے گھر والوں نے ایسی کیا سزا بتا دی کہ سب حیران

عمران کے دادا کا  کہنا تھا کہ عمران مسجد میں نقابت کرتا تھا، اس نے جو کیا گیا وہ حیران کن اور افسوسناک فعل ہے۔ننھی پری زینب کے قاتل عمران کے دادا کا کہنا تھا کہ عمران کو پھانسی ہونی چاہیے اور اسے سخت سے

سخت سزا دی جانی چاہیے۔دوسری جانب لاہور میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے قصور کی سات سالہ بچی زینب سے جنسی زیادتی اور قتل کے ملزم عمران علی کو 14 دن کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرنے کا حکم دیا ہے۔پولیس نے عمران علی کو 22 جنوری کو قصور سے گرفتار کیا تھا اور منگل کو صوبہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے لاہور میں ایک نیوز کانفرنس میں اعلان کیا تھا کہ ان کا ڈی این اے زینب کے جسم سے ملنے والے ڈی این اے سے مکمل مطابقت رکھتا ہے اور وہی اس کے قاتل ہیں۔بدھ کے روز 24 سالہ عمران کو سخت حفاظتی انتظامات میں لاہور میں انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں پیشی کے لیے لایا گیاپولیس کے مطابق قصور میں سنہ 2015 سے لے کر اب تک چھوٹی بچیوں کو اغوا کے بعد زیادتی کر کے قتل کرنے کی 12 وارداتیں ہو چکی ہیں۔ان میں سے تین وارداتوں میں ملزمان کو گرفتار کیا جا چکا ہے جبکہ آٹھ وارداتیں ایسی تھیں جن میں مجرم عدم گرفتار تھا۔حکام کا کہنا ہے کہ ملزم عمران نے دورانِ تفتیش بتایا کہ وہ پکڑے جانے کے ڈر سے بچوں کا گلا گھونٹ کر انہیں موت کے گھاٹ اتارتا تھا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.