انسداد دہشتگردی عدالت سے عمران خان کےخلاف دہشت گردی کے مقدمات کاتحریری حکم نامہ جاری

اسلام آباد : انسداد دہشتگردی عدالت نے عمران خان کےخلاف دہشت گردی کے مقدمات کاتحریری حکم نامہ جاری کردیا،جو انسداددہشتگردی عدالت کے جج شارخ ارجمند نے جاری کیا،حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ دہشتگردی دفعات سے متعلق عمران خان کے وکیل کے دلائل ٹھوس نہیں،تمام ملزمان کےخلاف دہشتگردی کے الزامات کاچالان موجود ہے اورملزمان کے بظاہرکردارپرانسداددہشتگردی ایکٹ کی دفعہ 6 کااطلاق نافز العمل ہوتا ہے،تاہم ملزمان کے حقیقی کردارکاتعین شہادتیں قلمبندہونے کے بعدہوگا
تحریری حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ ایف آئی آرزکے مطابق شرکا نے ایوان صدر،وزیراعظم ہاؤس پرحملہ کیا،سرکاری عمارتوں،پولیس افسران پرحملہ آوروں کاعام عدالت میں ٹرائل نہیں ہوسکتا،
جج شاہ رخ ارجمند نے مزید ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ صرف ایک ملزم کے کہنے پرمقدمہ عام عدالت نہیں بھیجاجاسکتا،لہٰذاعمران خان کی دہشتگردی دفعات ختم کرنے کی درخواستیں مستردکی جاتی ہیں اور19دسمبرکوعمران خان کی ضمانت میں توثیق پردلائل دیئے جائیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.