طاہر القادری کا سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی تحقیقات کیلئے ججز پرمشتمل جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ

لاہور:عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی تحقیقات کیلئے ججز پرمشتمل جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ کر دیا،پی ایس پی کے سربراہ مصطفی کمال کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری نے مطالبات پیش کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ شہبازشریف اور رانا ثنا اللہ فوری مستعفی ہوں اور خود کو قانون کے سامنے پیش کریں،سربراہ عوامی تحریک کا کہناتھا کہ سانحہ ماڈل ٹاﺅن آپریشن کا فیصلہ کرنے والے 125 بیورو کریٹس اور پولیس افسروں کو بھی عہدوں سے ہمیشہ کے لیئے ہٹایاجائے  ،انہوں نے کہا کہ انشااللہ ہم انصاف لے کر رہیں گےاوراس کیلئے قانونی اورسیاسی جنگ لڑتے رہیں گے ،اگر ضرورت پڑی تو کارکنوں کو کال دیں گے اور پرامن طور پر سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے کرداروں کو انجام تک پہنچائیں گے۔اان کا کہنا تھا ماڈل ٹاو¿ن میں ہلاکتوں کے ذمے دارشہبازشریف ،راناثناءاللہ اورساتھی ہیں،ماڈل ٹاو¿ن میں خون کی ہولی کھیلی گئی،ایسی مثال ملکی تاریخ میں نہیں ملتی،انہوںنے کہا کہ ساڑھے 3 سال ہم قانونی جنگ لڑتے رہے،حکومت نے رپورٹ کو پبلک نہیں کرنے دی،ہم جسٹس باقر نجفی اور لاہور ہائیکورٹ کے فل بنچ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جنہوں نے جرات مندانہ فیصلے کئے۔
جبکہ پی ایس پی کے سربراہ مصطفی کمال کا کہناتھا کہ ہم ڈاکٹر طاہر القادری کے مطالبے کی حمایت کرتے ہیں،رانا ثنااللہ کا نام سانحہ ماڈل ٹاﺅن رپورٹ میں آ چکا ہے ،سانحہ ماڈل ٹاو¿ن کے ذمے دارخود کو قانون کے حوالے کردیں ،انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاو¿ن کے ذمے داربے قصورہوئے توعدالت سے چھوٹ جائیں گے،مصطفی کمال کا مزید کہنا تھا طاہرالقادری کی کوشش سے رپورٹ منظرعام پرآئی اورسچ سامنے آگیا۔ان کا کہناتھا کہ بلدیہ فیکٹری میں آگ کاواقعہ حادثہ تھا آج بھی یہی کہتاہوں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.