ہم اپنے آئین کا تحفظ کریں گے,چیف جسٹس پاکستان

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ عدلیہ پر دباؤ ڈالنے والا ابھی پیدا نہیں ہوا، ہم اپنے آئین کا تحفظ کریں گے۔

لاہور میں تقریب سے خطاب کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز ہم نے عمران خان کی نااہلی سے متعلق فیصلہ سنایا، مجھے نہیں پتہ تھا کہ حدیبیہ پیپر ملز کیس کا فیصلہ اسی دن آنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عدلیہ پر کوئی دباؤ نہیں، ہم آزادی کے ساتھ کام کر رہے ہیں اور ہر جج کو رائے دینے کا حق ہے، ہم پر دباؤ ڈالنے والا ابھی پیدا نہیں ہوا، ہم نے تمام فیصلے قانون کے مطابق کیے، اگر کسی کا دباؤ ہوتا تو حدیبیہ پیپر ملز کیس کا فیصلہ وہ نہ آتا جو آیا ہے۔

جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ میں نے اور میرے ساتھیوں نے آئین کے تحفظ کی قسم کھائی ہے، اپنے بچوں کر شرمندہ چھوڑ کر نہیں جاؤں گا۔

انہوں نے کہا کہ عدلیہ آپ کی بزرگ ہے، آپ کے خلاف فیصلہ ہو تو یہ گالیاں نہ دیں کہ بابا کسی پلان کا حصہ بن چکا ہے۔ یہ بابا نہ تو کسی پلان کا حصہ بنا ہے اور نہ بنے گا، جج پوری ایمانداری اوردیانت سے فیصلہ کرتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ قانون میں اگر کہیں غلطی ہو تو نشاندہی کرنا جج کی ذمے داری ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.