کچھ ایشوزپر پارٹی کوچھوڑ کرقومی سوچ اپنانی چاہئے, چودھری نثار

اسلام آباد: سابق وزیرداخلہ چودھری نثارنے کہا ہے کہ قومی مسئلے پرحکومت کو اپوزیشن کی تقسیم سے ہٹ کر بطور پاکستانی سوچنا چاہئے۔گزشتہ روزمیرے چند کلمات کوتوڑمروڑکر پیش کیاگیا، کہا گیاحکومت کو چھوڑکراپوزیشن کاساتھ دیا، کچھ ایشوزپر پارٹی کوچھوڑ کرقومی سوچ اپنانی چاہئے،قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے چودھری نثار نے کہا کہ لعنت جیسے الفاظ یہاں ادا ہوتے ہیں کیا ان کی تشہیرضروری ہے؟،یا سنجیدہ موضوعات کی تشہیر ہونی چاہیے، انہوں نے کہا کہ کیا صرف حکومت اوراپوزیشن کی نظرسے ہرمعاملے کوناپا جائے گا؟،ہر چیز میں منفی پہلو کی تشہیر نہیں ہونی چاہیے؟،انہوں نے کہا کہ شیریں مزاری نے اچھی بات کی،حمایت کرکے کوئی گناہ نہیں کیا،میری کسی سے ذاتی لڑائی نہیں،ہمیشہ اچھی باتوں پراتفاق کیا۔
چودھری نثار نے کہا کہ ویزاآن ارائیول قومی سلامتی کامسئلہ ہے،اس پربحث ہونی چاہئے تھی،مجھے 6 ماہ لگے ویزا آن ارائیول کو ختم کرنے کےلئے،انہوں نے کہا کہ آئی این جی اوز کی جان کیری سمیت اہم طاقتوں نے حمایت کی،میں نے کہا کہ وہ طاقتیں کیوں آئی این جی اوز کی حمایت کرتی ہیں،ان کی امداد کا زیادہ حصہ ان تنظیموں کو جاتا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.