وزارت عظمی کے لئے شہباز شریف کی نامزدگی کا فیصلہ پارٹی نے کرناہے ،وزیر اعظم

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ آئندہ الیکشن میں شہباز شریف کی وزارت عظمی کی نامزدگی کا فیصلہ پارٹی نے کرنا ہے ،ان کے کام کرنے کے انداز سےدنیا بھی معترف ہے ،اگرپارٹی مجھے وزارت عظمی کے لئے نامزد کرے گی تو اس پر سوچوں گا۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن نے عدلیہ کے ہرفیصلے پر من و عن عمل کیا،عدالت کے باہر عدالت لگانے کی اجازت اعلی عدلیہ کو نہیں دینا چاہیے تھی ،قانون کے مطابق عدلیہ کے فیصلو ں پر تو پارلیمنٹ میں بحث نہیں ہوسکتی،اگر آپ کے خلاف میرٹ سے ہٹ کر فیصلے ہوں گے تو اس کا ردعمل تو آئے گا اس کا مطلب عدلیہ کی توہین نہیں۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ کے فیصلوں سے ملک کو بھاری نقصان ہوا جس کی پوری ان کیمرہ بریفنگ چیرمین سینٹ کودے چکا ہوں۔وزیر اعظم کہتے ہیں کہ ملک میں سینٹ کے الیکشن اپنے وقت پر ہوں گے ،عام الیکشن یکم جون سے 15جولائی تک کسی بھی وقت ہوسکتے ہیں ۔اخبار پڑھیں تو لگتا ہے کہ کل حکومت نہیں ہوگی صورتحال مختلف ہے ہم اپنا کام کررہے ہیں ۔ملک میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہے ہر دوسرے ہفتے ہماری میٹنگ ہوتی ہے ،ملک کے مسائل دھرنوں سے نہیں پارلیمنٹ میں حل ہوتے ہیں ،دھرنے والے اپنا شوق پورا کرلیں اگر کسی نے بھی حکومتی رٹ کو چیلنچ کرنے کی کوشش کی تو آئین کے مطابق کارروائی ہوگی۔شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں کہ مریم نواز نے پارٹی کے لئے بہت کام کیا،سوشل میڈیا پر جس طرح پارٹی کے موقف کو پہنچایا گیا اس حوالے سے ان کی خدمات قابل ستائش ہیں ،این اے 120کے ضمنی انتخاب میں انہوں نے ایک کامیاب مہم چلائی ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.