رائے ونڈ دھماکا، جاں بحق افراد کی تعداد 11 ہوگئی

لاہور : رائے ونڈ روڈ پر پولیس چوکی کے قریب ہونے والے دھماکے میں جاں بحق افراد کی تعداد 11 تک پہنچ گئی ہے۔ واضح رہے کہ لاہور کے مضافات میں رائِے ونڈ کے علاقے میں بدھ کی شب پولیس چوکی پر خود کش حملے میں ابتدائی طور پر چار افراد جاں بحق ہوئے، جس کے بعد جاں بحق افراد کی تعداد گیارہ تک پہنچ گئی۔ دھماکے میں اٹھائیس افراد زخمی بھی ہوئے۔ مرنے والوں میں اکثریت پولیس اہل کاروں کی تھی۔

پولیس کے مطابق رائے ونڈ روڈ پر پولیس چوکی کے قریب ہونے والے دھماکے میں جاں بحق افراد کی تعداد گیارہ تک پہنچ گئی ۔اسپتال ذرائع کے مطابق جاں بحق ہونے والے پولیس کانسٹیبل تھا، جس کا نام صابر تھا، جو جناح اسپتال میں زیر علاج تھا۔ دھماکے میں سات پولیس اہلکار شہید، جب کہ چار عام شہری بھی جاں بحق ہوئے۔ اٹھائیس زخمی لاہور کے مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ جناح اسپتال میں چھے اور جنرل اسپتال میں پندرہ زخمی موجود ہیں۔ تحصیل ہیڈ کوارٹر اسپتال رائے ونڈ میں چار اور شریف میڈیکل کمپلیکس میں تین زخمیوں کو  داخل کرایا گیا ہے۔ ڈاکٹرز کے مطابق دھماکے میں زخمی چار افراد کی حالت تشویشناک ہے۔

دھماکے سے متعلق فرانزک ماہرین کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ سے شواہد جمع کرلئے گئے ہیں، جب کہ علاقے کی جیو فینسنگ بھی جاری ہے۔ سہولت کار ہونے کے شبے میں چائنہ اسکیم سے ایک شخص کو بھی گرفتار کیا گیا ہے

واضح رہے کہ لاہور کے مضافات میں رائِے ونڈ کے علاقے میں بدھ کی شب پولیس چوکی پر خود کش حملے میں ابتدائی طور پر چار افراد جاں بحق ہوئے، جس کے بعد جاں بحق افراد کی تعداد گیارہ تک پہنچ گئی۔ دھماکے میں اٹھائیس افراد زخمی بھی ہوئے۔ مرنے والوں میں اکثریت پولیس اہل کاروں کی تھی۔

پولیس حکام کے مطابق دہشت گرد کا ہدف پولیس اہل کار تھے۔ واضح رہے کہ پولیس چوکی رائے ونڈ میں اس مقام کے قریب تھی جہاں تبلغیی جماعت کا اجتماع ہو رہا تھا۔ حملے کا مقدمہ تھانہ سی ٹی ڈی میں درج کرلیا گیا ہے۔ ایف آئی آر میں قتل، اقدامِ قتل اور دہشت گردی کی دفعات شامل کی گئیں ہیں۔

ایف آئی آر کے مطابق چار مبینہ مشکوک افراد نے تبلیغی مرکز کی طرف جانے کی کوشش کی۔ پولیس اہکاروں نے انہیں چیکنگ کے لیے روکا تو ایک شخص نے خود کو دھماکے سے اڑالیا، جب کہ مبینہ طور پر حملہ آور کے تین ساتھی فرار ہو گئے۔

دوسری جانب خود کش حملے میں جاں بحق ہونے والے پانچ پولیس اہلکاروں کی نمازِ جنازہ جمعرات کو لاہور پولیس لائن میں ادا کی گئی، جس میں وزیرِاعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے علاوہ اعلیٰ فوجی اور پولیس افسران نے شرکت کیگزشتہ سال جولائی میں لاہور میں سافٹ ویئر ٹیکنالوجی پارک کے قریب ہونے والے خودکش حملے میں 26 افراد ہلاک اور 50 زخمی ہو ئے تھے۔ گزشتہ سال فروری میں لاہور میں پنجاب اسمبلی سے کچھ فاصلے پر کیے جانے والے ایک حملے میں پولیس افسران اور اہلکاروں سمیت 18 افراد ہلاک اور 80 زخمی ہو گئے تھ


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.