تحریک طالبان پاکستان نے مجھ پر 10کروڑ روپے انعام رکھا ہے اس لیے مجھے سیکیورٹی کی ضرورت پڑتی ہے۔

اسلام آباد : سابق وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے پیپلز پارٹی کے جلسے میں روکے جانے پر  چھپنے والی خبر پر سینئر صحافی شاہین صہبائی کو کھلا چیلنج کردیا ۔

تفصیل کے مطابق دو روز قبل سینئر صحافی شاہین صہبائی نے بتا یا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے جلسے کے دوران رحمان ملک کو پیپلز پارٹی کے وزیر نےجلسہ گاہ کے باہر ہی روک لیا سابق وزیر داخلہ رحمان ملک کو روکے جانے کی وجہ اپنے ہمراہ لائی گئیں پولیس کی دو گاڑیاں تھیں ۔اس پر رحمان ملک نے کہا کہ تحریک طالبان پاکستان نے مجھ پر 10کروڑ روپے انعام رکھا ہے اس لیے مجھے سیکیورٹی کی ضرورت ہے ۔اس بات پر وزیر نے ہنستے ہوئے کہا کہ تحریک طالبان پاکستان سے پیسے کون لے گا ۔گزشتہ دن  شاہین صہبائی کے اس دعوے سے متعلق خبر شائع ہوئی  جس پر سابق وزیر داخلہ رحمان ملک نے سینئر صحافی کو کھلا چیلنج کردیا ۔ان کا کہنا تھا کہ یہ میرے خلاف سازش ہے۔رحمان ملک نے شاہین صہبائی کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ مجھے جلسے کے باہر روکنے کی فوٹیج سامنے لائی جائے تو میں استعفیٰ دے دوں گا ۔ انہوں نے کہا کہ اللہ انہیں سچ بولنے کی توفیق دے ۔دوسری جانب شاہین صہبائی کی ٹوئٹ پر رحمان ملک کے آفس سے کہا گیا ”شاہین صہبائی صاحب ،آپ کو یہ غلط معلومات دے کر دھوکہ دیا گیا ،سینئر صحافی ہونے کے ناطے آپ کو سینیٹر رحمان ملک کے دفتر سے اس معلومات کی تصدیق کرلینی چاہیے تھی،مہربانی فرماکر اخلاقی جرات کا مظاہرہ کریں اور اس کا نام بتائیں جس نے آپ کو دھوکہ دیا “۔اس پر جواب دیتے ہوئے شاہین صہبائی نے کہا کہ جنہوں نے یہ معلومات دیں وہ خود ہی سامنے آکر سچ بتا دیں گے ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.