پاکستان کرکٹ بورڈ نےناصر جمشید پر ایک سال کی پابندی لگا دی

لاہور:  پاکستان کرکٹ بورڈ نے پی ایس ایل سپاٹ فکسنگ کیس کی تحقیقات میں تعاون نہ کرنے پر اوپننگ بلے باز ناصر جمشید پر ایک سال کی پابندی عائد کردی۔
تفصیلات کے مطابق پی سی بی کی جانب سے ناصر جمشید پر سپاٹ فکسنگ کیس میں حکام کے ساتھ تعاون نہ کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ کیس کی سماعت کے دوران بار بار ناصر جمشید کو بار بار بلایا گیا لیکن وہ انگلینڈ سے پاکستان نہیں آئے جس پر وہ پی سی بی اینٹی کرپشن کی دو شقوں کی خلاف ورزی کے مرتکب پائے گئے۔ ناصر جمشید کو یہ سزا سپاٹ فکسنگ کیس میں نہیں بلکہ تحقیقات میں تعاون نہ کرنے پر دی گئی ہے۔واضح رہے کہ پی ایس ایل سپاٹ فکسنگ کیس میں ناصر جمشید پر الزام ہے کہ انہوں نے کھلاڑیوں کی بکیز کے ساتھ ملاقاتیں کرائیں۔ اس کیس میں شرجیل خان پر ڈھائی سال کی پابندی اور دس لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا جاچکا ہے، خالد لطیف کو پانچ سال کی پابندی اور دس لاکھ روپے کے جرمانے کا سامنا ہے۔ اس کے علاوہ فاسٹ باﺅلر محمد عرفان کو سپاٹ فکسنگ کیس میں چھ ماہ کی پابندی اور دس لاکھ روپے جرمانہ کیا گیا جبکہ بائیں ہاتھ کے سپنر محمد نوازپر ایک ماہ کی پابندی اور دو لاکھ روپے کا جرمانہ پہلے ہی عائد کیا جاچکا ہے


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.