نئی حلقہ بندیوں پر پنجاب اسمبلی کے ارکان بھی طلملا اٹھے،حکومتی و اپوزیشن اراکین کا عدم اعتماد

لاہور:نئی حلقہ بندیوں پر پنجاب اسمبلی کے ارکان بھی طلملا اٹھے ، حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے نئے حلقہ بندیوں پر عدم اطمینان کا اظہار کر دیا ۔ پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے دوران قائد حزب اختلاف میاں محمود الرشید نے نکتہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے سپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال سے کہا کہ نئی حلقہ بندیوں کی کسی کو کچھ سمجھ نہیں آرہی ، الیکشن کمیشن کی جانب سے جو نقشے جاری کئے جا رہے ہیں انہیں پڑھنا ممکن نہیں ہے جبکہ بعض سڑکیں توموجود ہیں لیکن موضع مکمل طور پر غائب ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی جانب سے دی گئی تاریخ کے مطابق تین اپریل تک حلقہ بندیو ں کے خلاف اعتراضات جمع کروائے جا سکتے ہیں لیکن ہمیں الیکشن کمیشن کی جانب سے متعلقہ ریکارڈ ہی نہیں دیا جا رہا جس کی بنا پر اعتراضات جمع کروائے جا سکیں۔صوبائی وزیر شیخ علاؤالدین نے بھی میاں محمود الرشید کے موقف کی تائید کی اور سپیکر سے کہا کہ وہ دونوں جانب سے ارکان پر مشتمل کمیٹی بنائیں جو الیکشن کمیشن کے حکام سے بات چیت کر کے مسئلے کو حل کرے جبکہ وزیر قانون رانا ثناء اللہ نے اس تجویز کو ناقابل عمل قرار دے دیا اور کہا کہ حکومت یا پنجاب اسمبلی کسی بھی صورت الیکشن کمیشن پر اثر اندازنہیں ہو سکتی، الیکشن کمیشن کی ویب سائیٹ پر تمام تفصیلات موجود ہیں جہاں سے انہیں ڈؤن لوڈ کر کے اعتراضات داخل کروائے جا سکتے ہیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.