Daily Taqat

العزیزیہ اورفلیگ شپ ریفرنس میں پیشی کے دوران صحافیوں کے سابق وزیراعظم نوازشریف سے سوالات

اسلام آباد : سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ ہر دور میں جمہوریت کے استحکام کے لئے وکلا کا کردار اہم رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس میں پیشی کے وقت مسلم لیگ (ن) لائرز ونگ کے رہنما بھی سابق وزیراعظم سے اظہار یکجہتی کے لئے پہنچے، جہاں قائد مسلم لیگ (ن) نے ان سے مختصر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہر دور میں جمہوریت کے استحکام کے لئے وکلا کا کردار اہم رہا ہے۔احتساب عدالت میں آمد پر نوازشریف نے لیگی رہنما سردار اورنگزیب نلوٹھا سے گفتگو کے دوران سوال کیا کہ ہزارہ موٹر وے کا کیا بنا ؟ جس پر لیگی رہنما نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہزار ہ موٹر وے بن گئی ہے اور اب لوگ اس کے ذریعے صرف 22 منٹ میں ہزارہ پہنچ جاتے ہیں۔اس موقع پر صحافی نے 12 اکتوبر 1999 میں سابق وزیراعظم کی حکومت کا تختہ الٹنے سے متعلق سوال کیا تو نواز شریف نے کوئی جواب نہ دیا اور خاموشی اختیار کی۔واضح رہے کہ 12 اکتوبر 1999ء کے مارشل لاء کو آج انیس سال مکمل ہوگئے، انیس سال پہلے پرویز مشرف کے طیارے کے مبینہ اغواء کی کوشش کو جواز بنا کر منتخب حکومت کا خاتمہ کیا گیا۔بارہ اکتوبر پاکستان کی جمہوری تاریخ کا تاریک دن، جب 1999ء کو اس وقت کے آرمی چیف جنرل پرویز مشرف نے منتخب حکومت کا تختہ الٹ کر اقتدار پر قبضہ کیا، معاملہ سپریم کورٹ پہنچا تو عدالت نے فوجی اقدام کی توثیق کرکے انتخابات اور اصلاحات کیلئے تین سال کا وقت دیا تاہم وہ تقریباً 10 سال برسر اقتدار رہے


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »