ایم کیو ایم کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے اپنی پارٹی کے ناراض کارکن کو منا لیا

ایم کیو ایم پاکستان کے سر براہ ڈاکٹر فاروق ستار جمعہ کو پارٹی کے ناراض رکن قومی اسمبلی علی رضا عابدی کو منانے میں کامیاب ہوگئے، جس کے بعد علی رضا عابدی نےاپنی قیام گاہ پر ڈاکٹر فاروق ستار کے ساتھ دوبارہ پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔

ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے علی رضا عابدی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پی ایس پی کے ساتھ پریس کانفرنس کا اچھا پیغام نہیں گیا، کارکنان پی ایس پی کے ساتھ پریس کانفرنس سے خوش نہیں تھے۔

انہوںنے کہا کہ علی رضا عابدی نے قومی اسمبلی کی رکنیت سے استعفیٰ  جذبات میں دیا، میرے لیے ضروری تھا کہ علی رضا عابدی کو موقع دوں اس لیے صرف علی رضا عابدی کے لیے آیا ہوں، میں کسی کے گھر نہیں گیا مگر عابدی کو منانے آیا۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم اتنی مضبوط ہے کہ وہ ہر طرح کے حالات کا سامنا کرسکتی ہےاگر پی ایس پی کے پاس ڈرائی کلین ہے تو ہمارے پاس بھی استری ہے ، اگر صبح کا بھولا شام کو گھر آجائے تو اسے بھولا نہیں کہا جاتااور ہم نے قالین کے نیچے سے تمام کچرا صاف کردیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ علی رضا عابدی کا مستقبل ایم کیو ایم سے جڑا ہے، اسی لیے انہیں اپنی ذمہ داریوں  کو جاری رکھنے کی ہدایت کی وہ اب بڑے ہوجائیں،میرا ان سے ذاتی لگائو ہے وہ ایک باصلاحیت نوجوان ہیں انہوں نے ہر معاملے پر پارٹی میں کھل کر بات کی ہے اور غلط فیصلوں کی مخالفت بھی کی۔

انہوںنےمزید کہا کہ تمام ناراض ارکان سے کہا کہ وہ پارٹی میں واپس آجائیں، اب ناراضگی کا سلسلہ بند ہونا چاہئے تاہم آرمی چیف کو لکھے گئے خط کا متن میڈیا میں لانے کی ضوروت نہیں اور جلد ہی علامہ طاہر القادری سے ملاقات کروں گا۔

اس موقع پر علی رضا عابدی نے کہا کہ مجھے معلوم ہوا تھا کہ شاید ایم کیو ایم کو ختم کر کے نئی پارٹی بنائی جارہی ہے، میں یہ فیصلہ تسلیم اور قبول نہیں کرسکتا تھا، فاروق بھائی نے میرے تحفظات کافی حد تک دور کردئیے، میرا پارٹی سے ذاتی لگاو ہے، اگر آئندہ بھی کچھ شکایات ہوئی تو فاروق بھائی سے مشورہ کروں گااور بات کروں گا۔

علی رضا عابدی نے ایم کیو ایم پاکستان میں واپسی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میری طرح تمام ناراض اراکین اپنی ذمہ داریاں ادا کریں۔

 


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.