پودینہ اور دھنیا بدبودار سانس کو ختم کرنے کا آسان حل

سانس میں بو کیوں پیدا ہوتی ہے؟ تاہم یہ بھی حقیقت ہے کہ اس سے نجات اتنی مشکل نہیں ہوتی، ایسے ہی کچھ طریقے درج ذیل ہیں، جو کہ 5 منٹ میں اس مسئلے سے نجات دلا سکتے ہیں۔ منہ کی صفائی زبان میں موجود بیکٹریا سانس میں بو کی بڑی وجہ بنتے ہیں، اپنی زبان کو ٹوتھ برش یا زبان صاف کرنے والے ٹول سے روزانہ صاف کرکے اس مسئلے سے بچا جاسکتا ہے، اسی طرح دن بھر میں 2 بار برش اور خلال کرنا بھی سانس میں بو سے بچانے میں مدد دیتا ہے۔ پودینے یا دھنیا سے مدد لیں اگر آپ کسی تقریب میں موجود ہیں اور سانس کی بو سے پریشان ہیں تو پودینے یا دھنیا کے پتے چبانا اس مسئلے سے نجات دلا سکتا ہے، یہ پتے دانتوں کو تو صاف نہیں کرتے مگر ان کی مہک سانس کی بو کو دبا دیتے ہیں، یہ طریقہ بہت موثر ہے مگر بہت کم وقت کے لیے کارآمد ثابت ہوتا ہے۔ لیموں چوس لیں لیموں صحت کے لیے فائدہ مند تو ہی ہے، اس کے ساتھ ساتھ سانس کی بو سے نجات دلانے کے لیے بھی انتہائی کارآمد ہے، کیونکہ یہ منہ کے ان بیکٹریا کو مارتا ہے جو کہ اس بو کا باعث بنتے ہیں۔ لیموں کے ایک ٹکڑے کو چوس لیں یا ایک گلاس پانی میں نچوڑ کر پی لیں۔ یہ طریقہ لہسن یا پیاز کھانے کے بعد آنے والی بو سے نجات کے لیے بھی موثر ہے۔ پانی مناسب مقدار میں پینا جسم میں پانی کی مناسب مقدار منہ کی صحت کے لیے بہت ضروری ہے، پانی کی کمی یا ڈی ہائیڈریشن کے نتیجے میں منہ کے مختلف امراض کا خطرہ بڑھتا ہے جن میں سانس کی بو بھی قابل ذکر ہے۔ تو مناسب مقدار میں پانی پینا عادت بنالینا بھی سانس کو بدبو دار ہونے سے بچاسکتا ہے۔ سانس میں بو کا باعث بننے والی بڑی وجہ سامنے آگئی ایک سیب کھالیں اس پھل میں پانی کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے جو منہ میں لعاب دہن کی مقدار بڑھاٹا ہے، جس سے سانس کی بو کا باعث بننے والے بیکٹریا ختم ہوجاتے ہیں۔ چائے طبی ماہرین کے مطابق صبح کے وقت منتخب کردہ مشروب بھی سانس میں بو سے نجات دلانے میں مدد دے سکتا ہے، اس کے لیے سبز چائے یا بغیر دودھ کی چائے کا استعمال فائدہ مند ہوتا ہے، جس کی وجہ ان مشروبات میں پولی فینولز کی موجودگی ہے جو کہ منہ میں بیکٹریا اور سلفرکمپاﺅنڈ کو کم کرتا ہے۔ چیونگم سے مدد لیں اگر تو سانس میں بو سے پریشان ہیں تو اس سے نجات کے لیے چیونگم سے بھی مدد لی جاسکتی ہے اور ہاں تمباکو نوشی کا استعمال بھی سانس میں بو کا باعث بنتا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.