Daily Taqat

کالے ہرن کے شکار سے متعلق لاہور ہائیکورٹ نے فیصلہ سنا دیا

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے کالے ہرن کے شکار پر پابندی سے متعلق قانون پر من وعن عمل درآمد کا حکم دیتے ہوئے گزشتہ 5 سال کا شکار سے متعلق ریکارڈ طلب کر لیا۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ محمد یاور علی نے شیراز

ذکا ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب وائلڈ لائف پروٹیکشن ایکٹ 1974 کے تحت کالے ہرن کا شکار غیر قانونی ہے۔ اس کے باوجود پنجاب میں کالے ہرن کا شکار ہو رہا ہے۔ درخواست گزار کے وکیل نے بتایا کہ کالا ہرن ایک نایاب جانور ہے۔ جس کا شکار کیا جا رہا ہے۔ لہذا عدالت کالے ہرن کے شکار پر پابندی سے متعلق قانون پر عمل درآمد کا حکم جاری کرے۔ عدالت نے دائر درخواست پر پنجاب حکومت کو کالے ہرن کے شکار پر پابندی سے متعلق قانون پر عمل درآمد کا حکم دے دیا۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »