Daily Taqat

العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کیس میں خواجہ حارث کی واجد ضیاء پر جرح جاری

احتساب عدالت میں العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت کے دوران خواجہ حارث نے گواہ واجد ضیاء پر جرح کی۔ ایون فیلڈ پراپرٹی ریفرنس میں ملزمان کا بیان جمعہ کو ریکارڈ کیا جائے گا۔ واجد ضیاء کہتے ہیں نوازشریف کے ویلتھ گوشواروں کے مطابق 41.410 ملین غیرملکی کرنسی ظاہر کی گئی۔ احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نواز شریف اور ان کے بچوں کے خلاف العزیزیہ اسٹیل مل ریفرنس کی سماعت کی، سابق وزیر اعظم نواز شریف اور مریم نواز عدالت پیش ہوئے۔ دوران سماعت واجد ضیاء نے کہا نوازشریف کے ویلتھ گوشواروں کے مطابق 41.410 ملین غیرملکی کرنسی ظاہر کی گئی ہے۔ جے آئی ٹی نے حسین نواز کی 14-2013 کی بینک سٹیٹمنٹ سے متعلق تفصیلات بھی حاصل کرلیں۔ واجد ضیاء نے عدالت کو بتایا کہ دوبینکوں سے نوازشریف کے اکاؤنٹ کی تفصیلات حاصل کی ہیں۔ 14-2013 میں ہل میٹل سے کچھ رقم آئی، جبکہ ٹیکس گوشواروں میں ویلتھ سٹیٹمنٹ جے آئی ٹی کے ساتھ منسلک نہیں تھا۔ کالم ان فلو میں پہلی انٹری اسی سال میں حسین نواز سے ملنے والے 41.470 ملین کی انٹری ہے۔

واجد ضیا نے مزید کہا کہ اسی سال دوسری انٹری 192.05 ملین ہل میٹل سے وصول ہونے والی رقم ہے۔ مجھے 14-2013 کی ویلتھ سٹیٹمنٹ دکھائی جائے تو پہچان سکتا ہوں۔ اس ویلتھ سٹیٹمنٹ میں 19 کروڑ روپے سے زائد صرف ایک بیرون ملک سے آنے والی رقم کی انٹری ہے۔  اس ویلتھ سٹیٹمنٹ میں 41.470 ملین روپے کی حسین نواز سے وصول ہونے والی رقم کی انٹری نہیں۔ اس ویلتھ سٹیٹمنٹ میں ہل میٹل سے آنے والی 192 ملین روپے کی انٹری بھی نہیں ہے۔ گواہ پر بحث کے معاملے میں واجد ضیا نیب پراسیکیوٹر اور خواجہ حارث کے درمیان گرما گرمی بھی ہوئی۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت پیر تک ملتوی کر دی۔ خواجہ حارث واجد ضیاء پر پیر کو بھی جرح جاری رکھیں گے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »