انتظار قتل کیس میں اہم پیش رفت۔ ایک اہم ویڈیو منظرعام پر

انتظار قتل کیس کی گتھی سلجھنے کا نام ہی نہیں لے رہی، مقتول کی دوست لیلیٰ کہاں چلی گئی؟، پولیس تلاش میں مصروف ہے۔ ذرائع سی ٹی ڈی کے مطابق لیلیٰ کے فلیٹ پر کل سے تالا لگا ہوا ہے، دوستوں کی مدد سے جلد پہنچ جائیں گے، ملزم بلال سے بھی لیلیٰ کے متعلق پوچھ گچھ کی گئی۔ ادھر انتظار کے قتل کیس میں روزانہ نئے حقائق سامنے آ رہے ہیں۔ کیس کی سی سی ٹی وی فوٹیج خفیہ

رکھنے کی وجہ بھی سامنے آگئی، ذرائع کا کہنا ہے سی سی ٹی وی میں سرکاری گاڑی میں نوجوان کو منشیات سپلائی کرتے دیکھا گیا، فوٹیج سامنے نہ لانے کی وجہ نوجوان اور گاڑی کوچھپانا بھی ہے، گاڑی میں سوار نوجوان ایک سیاسی شخصیت کا بیٹا بتایا جاتا ہے۔ ذرائع کے مطابق قتل سے چند منٹ پہلے مدیحہ اور انتظار کو سرکاری نمبر کی گاڑی سے منشیات فراہم کی گئی۔ مدیحہ کے بیان میں انتظار کو روزانہ اس نوجوان کی جانب سے منشیات دینے کا انکشاف بھی ہوا ہے۔ مدیحہ نے اپنے بیان میں بتایا وہ جب بھی انتظار سے ملی، ایک کیفے میں سرکاری نمبر پلیٹ والی گاڑی سے منشیات لی۔ سی ٹی ڈی نے انتظار قتل کیس کا ذمہ دار اے سی ایل سی اہلکاروں کو قرا دیا ہے۔ واقعے کی تفتیش کے لیے سی ٹی ڈی کی سفارش پر جے آئی ٹی بنا دی گئی۔ انتظار کے والد کو واقعے کی مکمل سی سی ٹی وی فوٹیج بھی دکھا دی گئی۔ مقتول کےوالد نے سی ٹی ڈی کی تفتیش پر بھی شبہات کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے جان چھڑانے کے لیے پرانی تفتیش پر فیصلہ کر لیا گیا۔ ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نے پہلے ہی نتائج تیار کر رکھے تھے، انصاف ہوتا نظر نہ آیا تو فوٹیج میڈیا کے حوالے کر دیں گے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.