جوڈیشل اصلاحات ناگزیرہوچکی ہیں سسٹم بہترکرنے کیلئے بنیادی فیصلوں کی ضرورت ہے:چیف جسٹس

اسلام آباد:چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ جوڈیشل اصلاحات ناگزیرہوچکی ہیں سسٹم بہترکرنے کیلئے بنیادی فیصلوں کی ضرورت ہے،شفاف انصاف کی فراہمی عدلیہ کی ذمہ داری ہے مقدمات میں تاخیرکی ذمہ داری کسی اورپرنہیں ڈالناچاہتا،انصاف کی جلدفراہمی کیلئے قوانین کوتبدیل کرنےکی ضرورت ہے۔

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کا لاء اینڈ جسٹس کمیشن کے اجلاس سے خطاب میں کہنا تھا کہ پنجاب میں اے ڈی آرنظام کااطلاق شروع ہو چکا ہے ملک کی تمام بارکونسلرنے اے ڈی آرنظام کوخوش آئندقراردیا۔انہوں نے کہا کہ دنیامیں مقدمات عدالتوں کے بجائے ثالثی کے ذریعے حل ہوتے ہیں۔چیف جسٹس کہتے ہیں کہ مقدمات کوجلدنمٹانے کیلئے افرادی قوت کی اشدضرورت ہے،کوشش ہے کہ انصاف کی جلدفراہمی ممکن بنائی جائے۔چیف جسٹس نے کہا کہ ناجائزمقدمہ درج کرانےوالوں کوجرمانے ہونے چا ہئیں،ججزکے ز یادہ وقت دینے کے باوجود فیصلوں میں تاخیرکی شکایات ہیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.