صحافی شاہد مسعود نے اہم انکشافات کر ڈالے

معروف صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہاکہ یہ معاملہ کور اپ ہو رہا ہے ، لیکن دستاویزات کچھ اور ہیں ۔ جب میں سپریم کورٹ پہنچا ہوں، تو اچانک وہاں ایک خاتون آئیں اور چیف جسٹس سے کہا کہ اس کیس کو آپ نہ سنیں،

میں لاہور سے پہنچی ہوں اور اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل ہوں۔اس معاملے پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے جے آئی ٹی کا اعلان کیا ہے تو آپ یہ معاملہ جے آئی ٹی کو ہینڈل کرنے دیں ۔میں نے ان خاتون کی بات سنی۔ جس کے بعد چیف جسٹس نے کہا کہ یہ معاملہ اتنا سنگین ہے کہ اگر ویک اینڈ پر میں نے کراچی نہ جانا ہوتا تو میں اس کیس کو اتوار کو سنتا۔ ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ یہ بات اکاؤنٹس سے ہٹ کر ہے ۔ اس کے بعد یہ ہوا کہ چیف جسٹس نے کہا کہ کیس کی مزید سماعت پیر کو ہو گی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.