ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے پر امریکی سفیروں کواسلامی ممالک سے نکالا جائے، جماعت اسلامی کا مطالبہ

کراچی: امیر جماعت اسلامی سینٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ گریٹر اسرائیل کے منصوبے پر کام شروع ہو چکا ہے، امریکی صدر کے فیصلے کیخلاف سخت اقدامات کی ضرورت ہے۔ جماعت اسلامی نے مطالبہ کیا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے پر امریکی سفیروں کو اسلامی ممالک سے نکالا جائے اورامریکی صدر کے اپنے فیصلے سے ہٹنے تک امریکا کابائیکاٹ کیا جائے، سراج الحق کا کہناتھا کہ دشمنان اسلام کا آخری ٹارگٹ بیت المقدس نہیں،او آئی سی پیغام دے کہ بیت المقدس کی آزادی کیلئے انتہاتک جائیں گے، حکمرانوں کی جانب سے عوام کے جذبات کے مطابق حکمرانی نہیں ہوئی،ان کا کہناتھا کہ حکمرانوں نے معیشت سے متعلق مفروضے قائم کئے ،چند ماہ میں 15 ارب ڈالر کا خسارہ ہو گیا ہے،انہوں نے کہا کہ نوازشریف کا احتساب جاری ہے ہمارا مطالبہ ہے کہ باقی 436 افراد کا احتساب کیا جائے ،جن لوگوں پر کیسز ہیں ان کو الیکشن میں حصہ لینے سے روکا جائے اورقرضے معاف کرانے اور قوم کو لوٹنے والوں کا احتساب کیا جائے ،امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ماڈل ٹاﺅن میں دن کی روشنی میں لوگوں کو قتل کیا گیا،مجرموں کو سزا دی جائے، سراج الحق نے کہا کہ ماڈل ٹاﺅن واقعہ سیاسی نہیں انسانی معاملہ ہے،دھرنا دینے یا نہ دینے کا فیصلہ طاہر القادری کا اپنا ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت فاٹا اصلاحات بل کے راستے میں رکاوٹ ہے،فاٹا معاملے پر حکومت نے بار بار وعدہ کیا لیکن فاٹا اصلاحات بل پارلیمنٹ میں پیش نہیں کیا انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے کی بحالی کے بعد صوبائی حکومت سے اتحاد کا تعین ہوگا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.