چھ مہینوں کے اندر اند ر نیو اسلام آباد ایئر پورٹ کا افتتاح کر دیا جائے گا: شیخ آفتاب احمد

اسلام آباد :وفاقی وزیر پارلیمانی امور شیخ آفتاب احمد نے کہا ہے کہ اسلام آباد کے نئے ایئر پورٹ کا افتتاح چھ مہینوں میں ہو جائے گا، ایئر پورٹ کا 88فیصد کام مکمل ہو گیا ہے پانی،میٹروبس اور ایئر پورٹ تک دو سڑکوں کی تعمیر کی وجہ سے تاخیر ہو رہی ہے،ایئر پورٹ کو آؤٹ سورس کرنے کے لیے بین الاقوامی ٹینڈر مانگے ہیں ۔ سینیٹ میں نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے بارے میں توجہ دلاؤ نوٹس کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر پارلیمانی امور شیخ آفتاب احمد نے کہا کہ اسلام آبا دکے نئے ایئر پورٹ کا ڈیزائن 2006میں نیسپاک نے بنایا اور اسکے لئے تین ہزار 2 سو 89 ایکڑ زمین خریدی گئی ، 2006میں پیپرا رول کے مطابق اس کا ٹینڈر کیا گیا اور اس پر 36.86ملین لاگت آئی تھی ، نئے ایئر پورٹ کے مقام پر پانی کا مسئلہ تھا کیونکہ وہاں پر زیر زمین پانی نہیں ہے، اس کی وجہ سے بھی منصوبہ تاخیر کا شکار ہوا،  2014میں ہماری حکومت آنے کے بعد ہم نے تیزی کے ساتھ کام کیا اور ایئر پورٹ میں بین الاقوامی سطح کی سہولیات دینے کے لیے مزید زمین خریدی اور وہاں پر عالمی معیار کی عمارت تعمیر کی، اب تک ایئر پورٹ کا 88فیصد تعمیراتی کام مکمل ہو چکا ہے ، پانی کے مسئلہ کو حل کرنے کے لیے دو ڈیم بنائے جا رہے ہیں جن میں سے ایک ڈیم 282ایکڑ پر مشتمل ہے اور اس میں پانی بھر گیا ہے جبکہ دوسرا کسانہ ڈیم زیر تعمیر ہے جبکہ ایئرپورٹ کی حدود میں گیا رہ ٹیوب ویل بھی لگائے گئے ہیں ، حکومت نے ایئر پورٹ کو آؤٹ سورس کرنے کے لیے بین الاقوامی ٹینڈر مانگے ہیں پوری دنیا کی طرف سے اس میں دلچسپی لی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیو ایئر پورٹ کی تعمیر میں کسی قسم کی کرپشن کی شکایت نہیں آئی، سینیٹ اور قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی میں اس منصوبہ کو دیکھ رہے ہیں اور وہاں بھی کرپشن کی کوئی شکایت نہیں آئی ہے ۔انہوں نے سینیٹ کو بتایا کہ ایئر پورٹ کو کھولنے کے لیے ضروری ہے کہ وہاں تک لوگوں کی رسائی آسان ہو ، ابھی تک میٹرو بس اور ایئر پورٹ تک جانے والی دو سڑکیں زیر تعمیر ہیں جسکی وجہ سے منصوبہ کے افتتاح میں تاخیر ہور ہی ہے ، چھ مہینوں کے اندر اند ر نیو اسلام آباد ایئر پورٹ کا افتتاح کر دیا جائے گا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.