اسحاق ڈار اشتہاری قرار علاج کے لئیے ملک سے باہر، ڈار کے وکیل کے ریمارکس

اسلام آباد: احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں اسحاق ڈار کو اشتہاری ملزم قرار دے دیا۔ عدالت نے ضامن کو3 دن کے اندر  50 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کا بھی حکم دیا ہے ۔ قبل ازیں اسحاق ڈار کے وکیل نے نئی میڈیکل رپورٹ عدالت میں جمع کر اتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اسحاق ڈار کی ایم آر آئی کا انتظار تھا۔ ان کے سینے میں تکلیف ہے۔ ابھی مزید ٹیسٹ ہونے ہیں ۔نیب نے میڈیکل رپورٹس کی تصدیق بھی نہیں کرائی۔ اسپیشل پراسیکوٹر نیب نے کہا کہ اسحاق ڈار کو دل کی کوئی تکلیف نہیں۔ ان ہر میڈیکل رپورٹ دوسری رپورٹ سے مختلف ہے۔ انہوں نے اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی استدعا کی۔ اسحاق ڈار کے وکیل نے اس کی مخالفت کی اور کہا کہ لاہورمیں جس رہائش پر تعمیل کرائی وہاں اسحاق ڈار 2 سال سے نہیں رہ رہے۔میڈٰیکل رپورٹ پر اسحاق ڈار کا ایڈریس لندن کا لکھا ہوا ہے۔ اگر عدالت جانتی ہے کہ ملزم کہاں پر ہے تو کیسے کہا جا سکتا ہے کہ وہ روپوش ہوگیا۔ اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار نہیں دیا جاسکتا۔نیب پراسیکیوٹرنے کہا کہ عدالت نے یہ دیکھنا ہے کہ ملزم کو عدالتی کارروائی کا علم ہے یا نہیں۔ ملزم عدالتی کارروائی سے مکمل طور پرآگاہ ہے۔اس لئے اشتہار کی تعمیل لندن میں کرانے کی ضرورت نہیں۔عدالت نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.