پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کا ملکی مالی حالات کے بارے میں تبصرہ

بنوں: (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کہتے ہیں کہ ملک قرضوں میں ڈوب چکا ہے،آمدن اوراخراجات میں فرق اورملکی خسارہ بڑھ گیاہے،وفاقی حکومت ریونیواکٹھانہیں کرسکتی،بنوں میں یونیورسٹی آف سائنس اینڈٹیکنالوجی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کہتے ہیں کہ آئندہ الیکشن میں انشاءاللہ مرکز میں حکومت بنے گی ،میں قوم کی حوصلہ افزائی کر کے 8 سو ارب روپے جمع کروں گا جوملک میں تعلیم اور صحت پر خرچ کئے جائیں گے ،ہم پیسہ اپنے نوجوانوں کے مستقبل پر خرچ کریں گے جو اس قوم  کے نو جوانوں  کو تر قی کی طرف لے کر جائے گا،انہوں نے کہا کہ میں وہ پاکستانی ہوں جسے پاکستانی قوم سب سے زیادہ پیسہ دیتی ہے،ہم جو بھی پیسا اکٹھا کریں گے اسے خرچ کرنے کیلئے پہلی ترجیح تعلیم کو دیں گے،ہم اپنے نوجوانوں کی تعلیم پر پیسہ خرچ کریں تو یہ ہماری طاقت بن جا ئیں گے،انہوں نے مزید کہا کہ سنگاپوریونیورسٹی کاسالانہ بجٹ پاکستان کے تعلیمی بجٹ جتناہے،پاکستان میں نوجوان کی آبادی دنیامیں دوسرے نمبرپر ہے،ہم نے ملک کےلئے وہ نہیں کیاجوکرناچاہئے تھا۔
عمران خان کہتے ہیں کہ کوئی پختون اورکوئی اردوبولنے والوں کے نام پرسیاست کرتاہے،جب کوئی مسئلہ آئے توجاگ پنجابی جاگ کہاجاتاہے،انہوں نے کہا کہ لاہورمیں بیٹنگ کرنے گیاتوشیر دل کے نعرے لگائے گئے اور جب پہلی گیندپرآؤٹ ہواتوایسے نعرے لگے جوبتانہیں سکتا،چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ، میری امید نوجوانوں سے ہے،عمران خان نے کہا کہ مودی کے ہندوستان میں آج مسلمانوں کاکوئی لیڈرنہیں اور کوئی ان کی فریاد سننے والا نہیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.