Daily Taqat

اگر مارشل لاء لگ گیا تو نہ صرف میں بلکہ میرے تمام 17 ججز نہیں ہوں گے، چیف جسٹس

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ مارشل لا کی کوئی گنجائش نہیں ہے، نہ ہی کسی نے ملک میں مارشل لا لگانے دینا ہے، جس دن ہمارے اوپر شب خون مارنے کی کوشش ہوئی سپریم کورٹ کا کوئی جج نہیں ہوگا۔ ایوان اقبال میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے انتہائی سخت لہجے میں کہا ”کچھ کہوں تو میڈیا پر

بھونچال آجاتا ہے کہ ملک میں مارشل لا لگ جائے گا، او بھئی کس چیز کا مارشل لا، کیسا مارشل ؟ مارشل لا لگانے کس نے دینا ہے؟ ہمارے ملک میں جمہوری حکومت ہے، جس دن ہمارے اوپر شب خون مارا گیا تو نہ صرف میں بلکہ میرے تمام 17 ججز نہیں ہوں گے“۔چیف جسٹس نے واضح کیا کہ یہ ملک اقبال کے تصور کے تحت بنا ہے اور اقبال اس ملک میں جمہوریت چاہتے تھے، یہ ملک صرف اور صرف جمہوریت کیلئے بنا ہے کسی اور ماورائے آئین چیز کی گنجائش نہیں ہے۔ انہوں نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ کسی جوڈیشل مارشل کا تصور نہ آئین میں ہے۔ اور نہ ہمارے ذہنوں میں ہے اپنے ذہن سے یہ بات نکال دیں اور اپنے ذہن صاف کریں، اس طرح کی کوئی چیز آئین میں موجود نہیں ہے۔ ہم ماورائے آئین کوئی کام کرنے کو تیار نہیں ہیں، ہم قوم کی سپورٹ کے ساتھ حقوق کیلئے لڑیں گے اور جس دن نہ لڑ سکے اس دن نوکری چھوڑ دیں گے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »