عمران علی کا کونسا شناختی کارڈ اصل ہے اور کون سا جعلی اس کا جواب تو پنجاحکومت ہی دے گی:طارق باجوہ

معروف صحافی شاہد مسعود کی جانب سے ملزم عمران کے متعدد بینک اکاﺅنٹ ہونے کے دعوے کے بعد ایک ہنگامہ سا برپا ہے جبکہ شہبازشریف نے اس کی تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی بھی تشکیل دیدی ہے تاہم اب سٹیٹ بینک کا حتمی موقف سامنے آ چکاہے کہ ملزم عمران کا کوئی بینک اکاﺅنٹ نہیں بلکہ صرف ایک موبائل اکاﺅنٹ ہے جس میں 130 روپے ہیں تاہم حکومت پنجاب کی جانب سے عمران علی سے متعلق سٹیٹ بینک کو تحقیقات کیلئے ایک اور شناختی کارڈ نمبر بھی فراہم کر دیا گیاہے۔گورنر سٹیٹ بینک طارق باجوہ کی جانب سے ملزم عمران کی بینک اکاﺅنٹ کی تفصیلات سے متعلق ایک اور انکشاف سامنے آیاہے جس کے مطابق حکومت پنجاب نے سٹیٹ بینک کو ایک اور شناختی کارڈ دیاہے جس کی چھان بین جاری ہے ۔گورنر سٹیٹ بینک کا کہناتھا کہ دوسرے شناختی کارڈ کی ابھی تک کوئی بینک اکاﺅنٹ سامنے نہیں آیاہے تاہم مکمل چھان بین کے بعد ہی اس سے متعلق کوئی جواب دیا جائے گا ۔طارق باجوہ کا کہناتھا کہ عمران علی کا کونسا شناختی کارڈ اصل ہے اور کون سا جعلی اس کا جواب تو پنجاحکومت ہی دے گی ،دوسرے شناختی کارڈ پر بھی بینک اکاﺅنٹس کی چیکنگ جاری ہے ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.