Daily Taqat

حسین حقانی کی واپسی کیلئے امریکا سے رابطے میں ہیں:ایف آئی اے

ایف آئی اے نے سپریم کورٹ کو بتایا ہے کہ میمو گیٹ اسکینڈل کے ملزم حسین حقانی کو پاکستان لانے کے معاملے میں امریکا سے تعاون کر رہا ہے۔ امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ان کا بھی ایک شہری پاکستان کے پاس ہے ۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ کیا انٹرپول کی طرف سے حسین حقانی کے ریڈ وارنٹ جاری کرنے سے انکار کیا گیا ہے ؟ اگر کوئی شخص امریکی سپریم کورٹ کو بیان حلفی دے کر پیش نہ ہو تو کیا ایسے امریکی شہری کو مانگنے پر پاکستان بھی انکار کرسکتا ہے؟۔

ڈی جی ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ ان کی امریکی حکام سے بات ہوئی ہے، ریڈ وارنٹ بھی دکھائے وہ کہتے ہیں کہ ان کا بھی ایک شہری پاکستان کے پاس ہے۔ ڈی جی ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ حسین حقانی پر چار ارب کی کرپشن کے الزام سے متعلق بھی امریکا کو آگاہ کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بانی ایم کیو ایم کے کیس کی طرح اس معاملے میں بھی امریکا کی طرف سے تعاون کیا جا رہا ہے۔ عدالت نےسینئر ایڈوکیٹ احمر بلال صوفی کو عدالتی معاون مقرر کرتے ہوئے مقدمے کی سماعت غیر معینہ مدت تک کے لئےملتوی کر دی۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »