Latest news

ہمیں کوئی ڈر اور خوف نہیں، مگر حکومت کی بنیادیں ہل رہی ہیں, حمزہ شہباز

 

نیب کے وکیل نے بتایا کہ حمزہ شہباز کے ذاتی اکاؤنٹ میں 2005ء سے 2007ء کے دوران 55 ملین ٹرانسفر ہوئے لیکن حمزہ اس رقم کے بارے میں کچھ نہ بتا سکے۔نیب کے وکیل کا کہنا تھا کہ 18 کروڑ روپے کی رقم بیرون ملک سے حمزہ شہباز شریف کے اکاؤنٹ میں آئی، ہم نے ان سے منی ٹریل مانگی تو حمزہ شہباز نے مزید وقت مانگا ہے۔وکیل حافظ اسد اللّٰہ نے بتایا کہ حمزہ شہباز نے جوہر ٹاؤن میں 2013ء سے 2017ء کے درمیان پراپرٹیز بھی خریدی ہیں، ان سے مزید تفتیش کیلئے جسمانی ریمانڈ میں 15 دن کی توسیع کی جائے۔اس موقع پر حمزہ شہباز کے وکیل امجد پرویز نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ 2007ء، 2008ء میں حمزہ شہباز پبلک آفس ہولڈر نہیں تھے، جبکہ بیرون ملک سے حمزہ شہباز کی جنتی رقم آئی پراپر چینل کے ذریعے آئی ہے۔حمزہ شہباز کے وکیل نے بتایا کہ نیب نے گزشتہ ریمانڈ بھی انہی بنیادوں پر لیا جس بنیاد پر آج مانگ رہے ہیں، حمزہ نیب کو تمام ریکارڈ فراہم کر چکے ہیں، لہٰذا نیب کی جسمانی ریمانڈ کی درخواست مسترد کی جائے اور انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجا جائے۔حمزہ کے وکیل امجد پرویز نے کہا کہ آمدن سے زائد کیس میں نیب نے حمزہ شہباز سے کچھ بھی ری کور نہیں کرنا اور نیب کاحمزہ شہباز پر تعاون نہ کرنے کا الزام غلط ہے۔

اس موقع پر عدالت نے نیب کی استدعا منظور کرتے ہوئے حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈ میں24 جولائی تک توسیع کر دی۔

 

 


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.