سابق وزیراعظم نوازشریف کی عمران خان پر مضہکہ خیزتنقید

لاہور: سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ہم سے اس وقت سے حساب لیا جارہا ہے جب میں کالج کا سٹوڈنٹ تھااور میرے پاس کوئی عہدہ بھی نہیں تھا جبکہ لاڈلے کو کہا جا رہاہے کہ گزشتہ پانچ سال تک کا حساب دے دو ،ایسے نہیں چلے گا ۔مسلم لیگ ن    کنونشن  سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مجھ سے ماڈل ٹاﺅن کی اس رہائش گاہ اوراتفاق فاﺅنڈری کا حساب مانگا جا رہا ہے جو 1969سے ہمارے پاس ہیں ۔نواز شریف نے خطاب کرتے ہوئے لوگوں کو بتا یا کہ ماڈل ٹاﺅن کی اس رہائش گاہ کا بھی حساب مانگا جا ر ہا ہے جہاں مریم نواز پیدا ہوئی تھیں ۔نواز شریف نے طنزیہ انداز میں کہا کہ لاڈلے سے صرف پانچ سال تک کا حساب مانگا جا رہا ہے ،ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے ،عمران خان نے خود آف شور کمپنیوں کی ملکیت قبول کی لیکن اسے جج کہتے ہیں پتر یہ تیرے اثاثے نہیں بلکہ یہ بھی نواز شریف کے اثاثے ہیں ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.