Daily Taqat

شاہد خاقان عباسی جب وفاقی وزیر تھے تب بھی ہمارے پاس کوئی سیکیورٹی گارڈ نہیں تھا:ڈاکٹر ثمینہ شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد :خاتون اول ڈاکٹر ثمینہ شاہد خاقان عباسی نے انٹرویو کے دوران بتایا کہ شاہد خاقان عباسی جب وفاقی وزیر تھے تب بھی ہمارے پاس کوئی سیکیورٹی گارڈ نہیں تھا ،ایک وقت میں ان کی والدہ نے سیکیورٹی کیلئے کہا تو کہنے لگے کہ ’آپ کو سیکیورٹی گارڈ چاہئیں ،والدہ نے کہا کہ نہیں تو انہوں نے جواب دیا کہ میرا محافظ بھی اللہ تعالیٰ کی ذات ہے ‘۔
ڈاکٹر ثمینہ شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ ہماری فیملی میں سادگی ہمارے آباؤ اجداد سے آئی جو آج تک قائم ہے ،کبھی بھی انہوں نے سیاسی طور پر بھی آگے آنے کی کوشش نہیں کی ،جب وہ وفاقی وزیر تھے تب بھی ہمارے پا س کوئی سیکورٹی گارڈ نہیں تھا ،۔انہوں نے کہا کہ میں نے اپنے بچوں کو ہمیشہ سیاست سے دور رکھا کیونکہ میرا خیا ل ہے کہ سیاست میں آنے کی وجہ سے آپ اپنی فیملی کووقت نہیں دے پاتے لیکن اب میر ے خیالات بدل گئے ہیں ،میرے بڑے دو بیٹے تو شائد سیاست میں نہ آئیں لیکن چھوٹے بیٹے کی تعلیم سیاست کے حوالے سے ہی ہے اس کا خود کا ارادہ بھی ہے لیکن ان کے والد اس کی حوصلہ افزائی نہیں کرتے ۔ پاکستانی سیاست کے بارے پوچھے جانے والے سوال میں ان کا کہنا تھا کہ آپ کی فیملی لائف تو ڈسٹرب ہو تی ہے لیکن اپنی قوم کے وسیع تر مفاد میں سیاست میں آناچاہیے ،پاکستان کوگزشتہ ستر سالوں میں سیاسی طورپر نقصان پہنچایا گیا اگر ملک میں جمہوریت قائم رہتی تو آج یکسرمختلف ہوتے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »