اہم خبرِیں
اب کشمیر جلد آزاد ہوگا، وزیراعظم لبنان، دھماکے میں ہلاکتیں 100 سے تجاوز کر گئیں تعلیمی ادارے 15 ستمبر سے کھولنے کا فیصلہ برقرار پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ میچ بدھ کو شروع ہوگا بھارت،سخت سیکیورٹی میں بابری مسجد کی جگہ مندر کا افتتاح مقبوضہ کشمیر میں بھارتی تسلط کے خلاف دنیا بھر میں’’یوم استحصال... نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری جاری اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میں مردم شماری کرائے،مشعال ملک پی آئی اے جعلی لائسنس اسکینڈل، تحقیقات کا دائرہ وسیع کرونا کے باعث بچوں کا سکول نہ جانا پوری نسل کا بحران ہے، اقوام... بھارتی حکومت عالمی دہشت گردوں کی سرپرست بھارت کسی خوش فہمی میں نہ رہے یوم استحصال اورکشمیر کی آزادی 5اگست کا المیہ اور اہلِ کشمیر کاردعمل مودی نے مقبوضہ کشمیر کی معیشت تباہ کردی، وزیراعظم عمران خان آرمی چیف کی سابق فوجی قیادت سے ملاقات پاکستان کا نیا نقشہ جاری، مقبوضہ کشمیر پاکستان کا حصہ قرار آرٹیکل 149 سمجھ سے بالاتر ہے، سندھ حکومت افراط زر بڑھ کر 9.3 فیصد ہو گیا ٹھٹھہ، نوجوان کی 11 موٹر سائیکلوں کے اوپر سے طویل چھلانگ

ہم اسلام آباد پرامن طور پر آئیں گے اور ہمارا کسی ادارے کے ساتھ تصادم کا ارادہ نہیں، امیر فضل الرحمان

لاہور : جمعیت علمائے اسلام (ف) کے امیر مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ حکومت کو این آر او نہیں دیں گے۔جامعہ مدنیہ لاہور میں ذرائع سے گفتگو میں مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ آزادی مارچ کے سلسلے میں عوام ہم سے بہت آگے ہیں، ابھی آزادی مارچ کی تاریخ کا تعین نہیں کر سکے، ایک دو روز میں تاریخ طے کرلی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ملک میں 15 ملین مارچ کرچکے ہیں، ہم اسلام آباد پرامن طور پر آئیں گے اور ہمارا کسی ادارے کے ساتھ تصادم کا ارادہ نہیں ہے۔مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کا پیغام آیا ہے کہ این آر اوز اور ڈیلز نے پاکستان کو اس نہج تک پہنچایا، حکومت کو این آر او نہیں دیں گے، عوام کی اذیت کا باعث ناجائز حکومت کا جانا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ جولائی 2018 میں دیگر سیاسی جماعتوں نے ہمارے ساتھ معاہدہ کیا تھا، انہیں اس پر عمل کرنا چاہیے، جمعیت علمائے اسلام تنہے تنہا بھی آزادی مارچ کرسکتی ہے مگر چاہتے ہیں سب جماعتیں ایک صف میں نظر آئیں۔ان کا کہنا ہے کہ آزادی مارچ میں تحفظ ناموس رسالت سمیت تمام ایشوز آتے ہیں، ہم آئین، اسلامی دفعات، بدامنی، مہنگائی اور عوام کے دیگر مسائل کے خلاف آزادی مارچ کر رہے ہیں۔علاوہ ازیں تحفظ ختم نبوت کانفرنس سے خطاب میں سربراہ جے یو آئی کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے ایران جاکر کہا کہ ہماری سرزمین ایران کے خلاف استعمال ہوئی،کیا یہ شخص ملک کا وزیراعظم ہے یا ملک کے خلاف وعدہ معاف گواہ ہے؟ ان کی پالیسیوں کے باعث ملک معاشی جمود کا شکار ہے، مہنگائی اور بے روزگاری سے عوام پریشان ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.