حساس اداروں کیجانب سےآئندہ سال ملک کے بیشترعلاقوں میں دہشتگردی کے انکشافات

اسلام آباد: حساس اداروں نے مستقبل قریب میں پاکستان کے مختلف علاقوں میں دہشتگردی کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔حساس اداروں کی طرف سے جاری کئے گئے ہائی الرٹ کے مطابق جماعت الاحرار نامی دہشتگرد تنظیم کے کمانڈر عبدالولی عرف خالد خراسانی نے جماعت الاحرار کودہشتگردی کا ہدف دیا ہے اور ہدایت کی ہے کہ وہ کنٹونمنٹ (آر ڈی نینس واہ فیکٹری) کے علاوہ کراچی اور فیصل آباد میں آئل کے گوداموں کو نشانہ بنانے کیلئے خودکش بمبار تیار کریں۔

خیبر پختونخوا میں داعش بھی دہشتگردی کی منصوبہ بندی کررہی ہے۔ منظور خان نامی دہشتگرد کو اسلام آباد، لاہور، کراچی اور کوئٹہ میں دہشتگردی کا ٹاسک دیا گیا ہے۔ حساس اداروں کی معلومات میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ افغان دفاعی تنظیم ”امن“ کوحافظ گل بہادر کی کمانڈ میں پاکستان میں دہشتگردی کا ٹاسک دیاگیا ہے جس کے مطابق افغان دفاعی تنظیم کے دہشت گرد لوئر کرم کے قریب سے افغان سرحد عبور کرکے پاکستان میں داخل ہونگے اور اپنے اہداف کو نشانہ بناکر روپوش ہونے کی کوشش کریں گے۔ اخباری ذرائع کا کہنا ہے کہ بہت سی وطن دشمن ایجنسیاں پاکستان کے اندر اپنا نیٹ ورک بناچکی ہیں جو سہولت کار کا کردار ادا کرتے ہیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.