تین سو سے زائد پلاٹوں کا ہیر پھیر کرنے والے کے ڈی اے افسران کو ہتھکڑیاں

کراچی : گلستان جوہرمیں چائناکٹنگ اورغیرقانونی الاٹمنٹ کیس میں عدالت نے بیس کے ڈی اے افسران کی درخواست ضمانت مسترد کردی۔ نیب نے سولہ افسران کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرلیا۔

تین سو سے زائد پلاٹوں کا ہیر پھیر کرنے والے کے ڈی اے افسران کو ہتھکڑیاں لگ گئیں۔ سندھ ہائیکورٹ سے ضمانت مسترد ہونے پر چودہ افسران کو احاطہ عدالت سے گرفتارکر لیا گیا۔ملزمان پر گلستان جوہر میں چائنا کٹنگ اور غیرقانونی الاٹمنٹ کا الزام تھا۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ جس نےجوکیااسےاس کی سزا ملنی چاہیے۔

سندھ ہائیکورٹ میں چائناکٹنگ اورغیرقانونی الاٹمنٹ کیس کی سماعت کے دوران نیب نےعدالت کو بتایا کہ کے ڈی اے افسران نے گلستان جوہر میں 300 پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کی۔بلڈرزکو فائدہ پہنچانے کے لیے قومی خزانہ کو نقصان پہنچایا۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ نہیں چاہتے شہر میں چائنا کٹنگ کا سلسلہ چلتا رہے۔۔

وکیل نے موقف اپنایاکہ اینٹی انکروچنمٹ انچارچ عرفان یوسفزئی کی گرفتاری سےتجاوزات کے خلاف آپریشن متاثر ہوگا۔

عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا جس نے جو کیا اسے اس کی سزا ملنی چاہیے۔چائنا کٹنگ کراتے ہیں اور عدالت کے ڈنڈے پر آپریشن بھی کرتے ہیں۔

عدالت نے بیس ملزمان کی درخواست ضمانت مسترد کردی جس کے بعد نیب نے پیشی پر آئے ہوئے سولہ افسران کو دھرلیا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.