ہمارے پیارے نبی حضرت محؐمد کی پیاری احادیث

رسول کریم ﷺ کی ارشاد کردہ جامع دعاؤں کے مجموعہ حصن حصین میں لکھا ہے کہ حضرت جبیر بن مطعمؓ سے حضور اقدس ﷺنے فرمایا’’ اے جبیر! کیا تمہیں یہ بات پسند ہے کہ سفر میں نکلو تو اپنے سب ساتھیوں سے بڑھ کر اچھے حال میں رہو اور سب سے زیادہ تمہارے پاس زادراہ رہے‘‘
حضرت جبیر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میں نے عرض کیا’’ میرے ماں باپ آپﷺ پر قربان ہوں۔ میں ضرور یہ چاہتا ہوں‘‘
آپ ﷺ نے فرمایا’’ تم یہ پانچ سورتیں سفر میں پڑھا کرو (۱) سورہ کافرون (۲) سورہ نصر (۳) سورہ اخلاص (۴) سورہ فلق (۵) سورہ ناس۔ ہر سورہ کو بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِیمِ سے شروع کیا جائے۔ پھر سورہ ناس کے بعد بھی بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِیمِ پڑھی جائے ۔اس طرح پانچ سورتیں اور چھ مرتبہ بسم اللہ شریف پڑھنی ہے‘‘

حضرت جبیر رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ میں غنی اور زیادہ مال والا تھا جب سفر میں نکلتا تھا تو اپنے ساتھیوں میں سے سب سے زیادہ بدحال ہوجاتا تھا اور میرا زاد راہ بھی سب سے کم ہوجاتا تھا ۔جب سے میں نے حضور اقدسﷺ سے سفر میں ان سورتوں کے پڑھنے کا علم حاصل کیا ہے برابر ان کو سفر میں پڑھتا ہوں اور سفر سے واپس آنے تک اپنے ساتھیوں میں سے سب سے زیادہ اچھے حال میں رہتا ہوں اور میرا زاد راہ بھی سب سے زیادہ رہتا ہے ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.