جمہوری نظام کی بقا کے لیے کرپشن کا خاتمہ,کرپٹ اور بددیانت قیادت سے چھٹکارا ضروری ہے:سراج الحق

اسلام آباد:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ 2018ءمیں صاف و شفاف انتخابات نہ ہوئے تو الیکشن کمیشن پر سےعوام کا رہا سہا اعتماد بھی اٹھ جائے گا،ماضی کی طرح اس بار کوئی بھی جھرلوانتخابات تسلیم نہیں کرے گا، جمہوری نظام کی بقا کے لیے کرپشن کا خاتمہ اور کرپٹ اور بددیانت قیادت سے چھٹکارا ضروری ہے،ہم بیک وقت انتخاب اور احتساب چاہتے ہیں کیونکہ احتساب کے بغیر ہونے والے انتخابات میں چوروں اور لیٹروں کو دوبارہ لوٹ کھسوٹ کا موقع مل سکتا ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ 2018کے انتخابات سے قبل انتخابی اصلاحات کا نفاذ انتہائی ضروری ہے، الیکشن کمیشن کو آئندہ انتخابات میں قوم کی امانتوں میں خیانت کرنے والے کسی کرپٹ اور بددیانت کو الیکشن لڑنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے،پانامہ لیکس آف شور کمپنیوں ،بینکوں سے قرضے لے کر معاف کرانے والوں کو جب تک عدالت عظمیٰ کی طرف سے کلیئرنس نہیں مل جاتی انہیں عوام کو ایک بار پھر دھوکہ دینے کا موقع نہیں دینا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی نظام کی خرابیاں دور کئے بغیر دیانت دار قیادت کا تصور نہیں کیا جاسکتا،انتخابات کو دولت کا کھیل،سیاست اور جمہوریت کو گھر کی لونڈی سمجھنے والے 70سال سے عوام کی گردنوں پر سوار ہیں،اقتدار کے ایوانوں پر قابض رہنے والوں نے خود تو اندرون و بیرون ملک بڑے بڑے محل تعمیر کرلیے مگر عوام کو آج بھی سر چھپانے کے لیے چھت، صحت ،تعلیم، اور روزگار کی سہولتیں دستیاب نہیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی عام آدمی کے لیے اقتدار کے ایوانوں کے دروازے کھولنے کی جدوجہد کررہی ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.