شہباز شریف پرائیویٹ کمپنی کے چارٹرڈ طیارے پر گئے,ضیا شاہد

معروف صحافی و تجزیہ کار ضیا شاہد نے کہا ہے کہ شہباز شریف ایک چارٹڈ طیارے پر سعودی عرب گئے ہیں۔ وہ طیارہ پرائیویٹ کمپنی کا ہے جس کا نام این اے ایس ہے۔ یہ غلط فہمی پیدا ہوگئی ہے، طیارہ سعودی عرب کی حکومت کی جانب سے آیا تھا۔ اب نواز شریف کو دیکھنا ہے کہ وہ کس طیارے میں وہاں جاتے ہیں۔ میاں نواز شریف کو پاکستان سے لے جانے اور مشرف کے طیارہ سازش کیس میں سزا سے بچانے میں سعودی عرب نے اہم کردار ادا کیا۔ آٹھ سال تک شریف فیملی کو ایک محل میں رکھا اور یوں ایک بڑی ٹینشن رفع دفع ہوئی۔انہوں نے کہا کہ یہ کہنا ابھی ذرا مشکل ہے کہ این آر او ہوگایا نہیں ہوگا لیکن اس بات میں وزن ہے کہ جس طرح میاں شہباز شریف سعودی عرب گئے ہیں ، کل نواز شریف بھی وہاں جارہے ہیں۔ سعودی عرب نے ہمیشہ کہا ہے کہ پاکستان میں کسی قسم کی بے چینی نہیں ہونی چاہیے یہ ایک نیوکلیئر، اہم مسلم ملک ہےا و رپاکستان کو معاشی طور پر ایسا خطرہ لاحق نہیں ہونا چاہیے جس سے معیشت ڈوب جائے۔ لہٰذا ایسے ہر موقع پر جب پاکستان میں متحارب قوتیں ایک دوسرے سے الجھیں اور لڑائی شروع ہوگئی جس سے مملکت پاکستان کو خطرات لاحق ہو ئے اور اس کا استحکام خطرے میں پڑ ا  تو سعودی عرب نے اپنا کردار ضرور ادا کیا ہے۔ضیا شاہد نے کہا  ذوالفقار علی بھٹو کے زمانے میں قومی اتحاد یعنی ذوالفقار علی بھٹو اور پی این اے کے درمیان الیکشن کی دھاندلی کے الزام پر ٹینشن بڑھی اور پورا ملک سڑکوں پر آیا تو سعودی عرب نے کردار ادا کیا تھا۔ اس مرحلے پر ریاض الخطیب جو سعودی عرب کے سفیر تھے، وہ ایک طرف بھٹو سے ملتے تو دوسری طرف سہالہ میں نواب زادہ نصراللہ سے ملتے۔ ان کی کوششوں سے اپوزیشن کے نظر بند ارکان کو رہائی ملی اور آپس میں معاملات طے کرواکر مسائل حل کروائے گئے۔ان کا کہنا تھا کہ سعودی سفیر سے ہم نے کھانے کے دوران یہ سوال کیا کہ سعودی حکومت میاں نواز شریف کیلئے کوئی این آر او کروانے جارہی ہے۔ تو انہوں نے جواب دیا نہیں ایسی کوئی کوشش نہیں ہورہی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.