Daily Taqat

چیئر مین نیب نے وفاقی وزارت ہیلتھ سروسز کے افسر کے خلاف جاری انکوائری کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا

قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جناب جسٹس جاوید اقبال نے نیب کی طرف سے دائر کئے گئے ریفرنسز میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی (DRAP) وفاقی وزارت ہیلتھ سروسز کے افسر شیخ اختر حسین کو مردہ قرار دینے اور ان کے آمدن سے زائد کروڑوں روپے کے اثاثے بنانے کے مبینہ الزامات کا نوٹس لیتے ہوئے نیب کو انکوائری کا حکم دیا تھا۔
نیب میں جاری انکوائری اور مبینہ الزامات کی محکمانہ انکوائری نہ ہونے کے باوجود شیخ اختر حسین کو ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کا چیف ایگزیکٹو تعینات کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نیب نے ڈائریکٹر جنرل نیب راولپنڈی کو شیخ اختر حسین کے خلاف جاری انکوائری رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ واضح رہے کہ نیب دو فروری 2018کو ریٹائرڈ ہونے والے ڈریپ کے سابق چیف ایگزیکٹو اسلم افغانی کی تعیناتی کی بھی انکوائری کررہا ہے جن کو اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے مبینہ طور پر پرائیویٹ میڈیسن کمپنی کا مالک ہونے کے باوجود قواعد و ضوابط کے خلاف سرکاری عہدے پر تعینات کیا گیا جو کہ ان کے مفادات کے خلاف تھا۔ انہوں نے مبینہ طور پر چیف ایگزیکٹو ڈریپ ہوتے ہوئے ادویات کی قیمتیں بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا جس سے ان کی کمپنی کو مبینہ طور پر کروڑوں کا فائدہ ہوا۔ جس کا بوجھ پاکستان کے قریب عوام کو اٹھانا پڑا۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »