2022ء تک ملک میں گاڑیوں کی طلب 5 لاکھ یونٹس سالانہ تک پہنچ جائے گی، پاپام حکام

2022ء تک ملک میں گاڑیوں کی طلب 5 لاکھ یونٹس سالانہ تک پہنچ جائے گی۔ پاکستان ایسوسی ایشن آف آٹو موٹیو پارٹس اینڈ اسیسریز مینو فیکچررز (پاپام) کے حکام نے کہا ہے کہ جاری مالی سال کے دوران قومی معیشت کی شرح نمو 6 فیصد

تک بڑھنے کی توقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) کے تحت بنیادی ڈھانچہ کے بڑے ترقیاتی منصوبوں اور کیپٹل مارکیٹ میں کی جانے والی سرمایہ کاری کی شرح میں اضافہ اور ملک میں امن وامان کی صورتحال کی بہتری سے قومی معیشت پر انتہائی مثبت اثرات مرتب ہو رہے ہیں اور توقع ہے کہ جاری مالی سال کے اختتام پر پاکستان میں فی کس آمدن 1700 ڈالر تک بڑھ جائے گی۔انہوں نے کہا کہ معیشت کی ترقی اور فی کس سالانہ آمدنی میں اضافہ سے گاڑیوں کی طلب میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور چار سال کے بعد سال 2022ء تک پاکستان میں گاڑیوں کی سالانہ طلب پانچ لاکھ یونٹس تک بڑھنے کی توقع ہے جس سے شعبہ میں ترقی اور سرمایہ کاری کے وسیع امکانات کی عکاسی ہوتی ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.