اہم خبرِیں
سپریم کورٹ کی حکومت کو شوگر ملز کیخلاف کارروائی کی اجازت زمین کے پاس سے گزرتا ’دُم دار ستارہ‘ پاکستان سے کیسے دیکھا جائ... گوگل بھارت میں دس ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا بھوک بڑھنے سے 12 ہزار افراد روزانہ ہلاک ہو سکتے ہیں، رپورٹ امریکی شہر کیلی فورنیا میں کورونا نے تباہی مچا دی پاکستان نیوی کے بحری بیڑے میں نئے اور جدید بحری جنگی جہازپی ای... معاشرے میں بگاڑ کے اسباب ”کشمیریوں کی زندگی کی بھی اہمیت ہے“ مجھے دشمن کے بچوں کو پڑھانا ہے پاکستان ترقی کا ہدف حاصل کرنے میں کامیاب، اقوام متحدہ کی رپورٹ... امریکی بحری جنگی جہاز میں دھماکا، 21 افراد زخمی سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پرمیزائلوں سے حملہ دنیا بھر میں آج یومِ شہدائے کشمیر منایا جائے گا پاکستان فرانسیسی شعبہ زراعت اور شعبہ حیوانات کی مہارت سے استفا... میر شکیل الرحمان کی ہمشیرہ کے انتقال پر سی پی این ای کا تعزیت ... شمالی وزیرستان، پاک فوج کا آپریشن، چاردہشت گرد جہنم وصل گھوٹکی ٹرین حادثے کو پندرہ سال بیت گئے پاکستان میں کورونا کے 2 ہزار 521 نئے کیسز،74 اموات انگلستان کی پاکستان میں ڈھائی لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری آیاصوفیہ مسجد کی کہانی

نقلی ٹریفک وارڈن بن کر شہریوں کو لوٹنے والا دس سال بعد قانون کی گرفت میں آگیا

ٹریفک وارڈن بن کر دس سال تک شہریوں کو لوٹنے والا جعلساز بالاخر قانون کے ہتھے چڑھ گیا، جس سےجعلی سروس کارڈ، پستول، یونیفارم بیجز اور دیگر آلات برآمد کرلئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق نقلی ٹریفک اہلکار دس سال بعد اصلی ٹریفک پولیس کی گرفت میں آگیا۔

ملزم شہزاد انور جعلی ٹریفک وارڈن بن کر بس اسٹاپ کے قریب شہریوں کے چالان کر رہا تھا، اسی دوران اصلی ٹریفک وارڈن موقع پر پہنچ گیا۔ اپنی جگہ اسے دیکھ کر شہزاد سے پوچھ گچھ کی تو وہ گھبرا گیا، شک ہونے پر اسے پکڑلیا۔ سٹی ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ گوجرنوالہ کا شہری شہزاد جو ٹریفک وارڈن کا روپ دھارے شہریوں کے چالان کرکے جعلی رسیدیں دیتا تھا۔ جعلی ٹریفک وارڈن سے جعلی سروس کارڈ، چالان کی رقم ، پستول، یونیفارم بیجز برآمد ہوئے۔

دوران تفتیش ملزم نے بتایا کہ وہ گزشتہ 10 سال سے ٹریفک وارڈنز کا یونیفارم پہن کر لوگوں کو لوٹ رہا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے اور تحقیقات کی جارہی ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.