برسات کے موسم میں استعفوں کی بارش، دوہری شہریت اور اثاثہ جات کی تفصیلات دو معاونین لے اُڑی

لاہور (عامر اسماعیل ) وزیراعظم پاکستان کے دو اہم معاونین نے گزشتہ روز اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا، معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان پروگرام تانیہ ادروس نے دوہری شہریت رکھنے کے باعث تنقید کی وجہ سے استعفیٰ دیکر مشکل حالات میں خود کو حکومت سے الگ کرلیا، سابق معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان پروگرام تانیہ ایدرس کینیڈا کی پیدائشی شہری جبکہ سنگاپور کی مستقل رہائشی ہیں اور سابق معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اثاثہ جات سے حزب اختلاف کی تنقید کی زد میں تھے، تانیہ ایدرس سنگاپور میں واقع گوگل کے علاقائی ہیڈ آفس میں اہم پوزیشن پر فائز تھیں جبکہ ڈاکٹر ظفر مرزا ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن میں اپنی خدمات سرانجام دے رہے تھے، تانیہ ایدرس نے پاکستان آکر انکشاف کیا تھا کہ وہ جہانگیر ترین کی دعوت پر گوگل کو خیر باد کہہ کر پاکستان آئی ہیں، زرائع کے مطابق جہانگیر خان ترین کی وزیر اعظم عمران خان سے شوگر سکینڈل کے بعد دوریاں بڑھنے کی وجہ سے جہانگیر ترین گروپ کے اراکین کی حکومت سے ناراضگی کا کھل کر اظہار کیا جارہا ہے اور تانیہ ایدرس کا استعفیٰ اسی کی ایک کڑی ہے تاہم یہ بھی چہ میگوئیاں جاری ہیں کہ عید کے بعد مزید اس ناراضگی کا نتیجہ سامنے آئے گا، دو معاونین خصوصی کے استعفوں کے پیچھے ایک اور معاون خصوصی کا نام گردش کررہا ہے جو خود دوہری شہریت کے حامل ہیں، زرائع کے مطابق حکومت کے ” شوکت عزیز” جلد اپنے اپنے ملکوں میں اڑان بھر لیں گے، پاکستان آکر خدمات پیش کرنے کا دعویٰ کرنے والے دوسرے ممالک کی شہریت پاکستان پر قربان کرنے سے انکار کرتے نظر آتے ہیں، ڈاکٹر ظفر مرزا نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ میں وزیر اعظم کی دعوت پر پاکستان آیا تھا میں مطمئین ہوں کہ پاکستان میں کرونا وائرس کا گراف نیچے آرہا ہے،خیال رہے کہ 18 جولائی کو کابینہ ڈویڑن نے وزیراعظم کے 20 مشیروں اور معاونین خصوصی کے اثاثوں اور دوہری شہریت کی تفصیلات جاری کی تھیں جس کے مطابق 19 غیر منتخب کابینہ اراکین میں سے وزیراعظم کے 4 معاونین خصوصی دوہری شہریت کی حامل ہیں، معاون خصوصی شہباز گل امریکی گرین کارڈ ہولڈرہیں۔ کابینہ ڈویڑن کے مطابق وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدروس کے پاس کینیڈا اور سنگاپور کی شہریت، معاون خصوصی نیشنل سیکورٹی ڈویڑن معید یوسف کی امریکہ کی رہائش ہے۔ معاون خصوصی پٹرولیم ندیم بابر امریکی شہریت کے حامل ہیں جن کے اثاثوں کی مالیت 2 ارب 75 کروڑ 28 لاکھ ہے۔وزیراعظم کے دیگر معاونین خصوصی میں سے بعض تو ایسے ہیں جن کے ڈیکلیئر کئے گئے اثاثہ جات کی وجہ سے حکومت اور عوام میں سخت تنائو کا حدف بنی ہوئی ہے۔جہانگیر ترین کی وجہ سے ہی یہ پارٹی میں شامل ہوئیں اور لگتا ہے ترین صاحب کے جانے کے بعد وہ بھی پارٹی کو خیر باد کہہ گئیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.