Daily Taqat

بلوچستان حکومت میں تبدیلی نہ آسکی، کابینہ ارکان کو نئی گاڑیاں فراہم کردی گئیں

بلوچستان میں تاحال تبدیلی نہیں آسکی، صوبائی کابینہ میں وزراء اور مشیران کو حکومت بلوچستان کی جانب سے نوازشات کا آغاز کردیا گیا۔ نئی بیش قیمت گاڑیاں بھی فراہم کردی گئیں۔ جس کی وجہ سے مجموعی طور پر 9 کروڑ 67 لاکھ 35 ہزار روپے کا اضافی بوجھ برداشت کرنا پڑا۔ غریب صوبے کے وزراء 27 سو سی سی گاڑیاں ملنے پر پھولے نہیں سمارہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق صوبائی وزراء کو آلاٹ کی گئی گاڑیوں کی خریداری سے صوبے کے خزانے پر 9 کروڑ 67 لاکھ 35 ہزار روپے کا خرچ آیا ہے، جو پہلے سے ہی ہچکولے کھاتی معیشت پر مزید بوجھ کا باعث بنے گا۔ ذرائع کے مطابق 15 گاڑیوں میں سے 11 گاڑیاں 10 صوبائی وزراء اور ایک مشیر کو آلاٹ کی گئی ہے، جبکہ دوسرے مرحلے میں کابینہ میں شامل ہونے والے وزراء اور مشیران کیلئے پہلے سے ہی گاڑیوں کی خریداری کی جاچکی ہے۔

ذرائع کہتے ہیں کہ نو منتخب کابینہ میں سے کسی نے بھی پرانی گاڑیاں استعمال کرنے کی حامی نہیں بھری بلکہ وزراء تو ایک سے زیادہ گاڑیاں حاصل کرنے کے بھی خواہش مند تھے۔ دوسری جانب سیکرٹریٹز اور بیوروکریٹس نے بھی نئی حکومت کے ساتھ ہی پرانی گاڑی سے جان چھڑانے اور نئی گاڑی کے حصول کی فرمائشیں کر ڈالی، جس کے لئے مراسلے بھی ارسال کرنے شروع کر دئے گئے ہیں۔

ایک جانب وفاق میں پاکستان تحریک انصاف سیاستدان بیوروکریٹس اور افسران کے زیر استعمال بیش قیمت گاڑیوں کی نیلامی کرنے جارہی تھی، تو دوسری جانب بلوچستان میں حکومت نے وزراء اور بیوروکریٹس کو نوازنے کی روش برقرار رکھی۔ اہل اقتدار کے اس روئیے پر عوامی حلقے سوچ میں مبتلا ہیں کہ بھلا اپنی جیبیں بھرنے والے یہ سیاستدان صوبے کے مسائل کو کیسے حل کرپائیں گے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »